Friday, July 3, 2020  | 11 ZUL-QAADAH, 1441
ہوم   > بین الاقوامی

کینٹکی:سیاہ فام افراد کے حق میں مظاہرے کےدوران فائرنگ،ایک شخص ہلاک

SAMAA | - Posted: Jun 29, 2020 | Last Updated: 4 days ago
SAMAA |
Posted: Jun 29, 2020 | Last Updated: 4 days ago

امریکی ریاست کینٹکی کے شہر لوئی ویل میں سیاہ فام خاتون کی پولیس فائرنگ سے ہلاکت کے خلاف احتجاج کرنے والوں کے مظاہرے میں فائرنگ ہوئی ہے۔ پولیس نے فائرنگ سے ایک شخص کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی ہے۔

امریکی خبر رساں ادارے اے پی کی رپورٹ کے مطابق لوئی ویل میں مظاہرین سیاہ فام خاتون بریونا ٹیلر کی 3 ماہ قبل ان کے گھر کے اندر پولیس کی فائرنگ سے ہلاکت کے خلاف احتجاج کر رہے تھے۔ لوئی ویل میٹرو پولیس کا کہنا تھا کہ جیفرسن اسکوائر پارک میں رات کے نو بجے فائرنگ کا واقعہ پیش آیا۔

پولیس نے ایک آدمی کے موقع پر ہلاک ہونے کی تصدیق کی۔ بعد ازاں پولیس کو قریب ہی ایک اور شخص کو زخمی کیے جانے کی بھی اطلاع ملی جس کو اسپتال منتقل کیا گیا۔ حکام نے مذکورہ شخص کی حالت خطرے سے باہر بتائی ہے۔ فائرنگ کے واقعے کے حوالے سے سوشل میڈیا پر ویڈیو بھی وائرل ہوئی، جس میں نظر آ رہا ہے کہ ایک شخص فائرنگ کر رہا ہے جب کہ پارک میں موجود مظاہرین چھپنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ویڈیو میں یہ بھی نظر آتا ہے کہ کم از کم ایک شخص زمین پر پڑا ہوا ہے جس کے جسم سے خون بہہ رہا ہے۔ واقعے کے بعد انتظامیہ نے پارک کو خالی کرا لیا۔ دوسری جانب پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ واقعے سے متعلق زیادہ سے زیادہ معلومات جمع کرنےکی کوشش کی جا رہی ہے تاکہ اس واقعے میں ملوث افراد کی نشان دہی ہو سکے۔

پولیس نے کسی بھی گرفتاری، ممکنہ ملزمان یا نشانہ بننے والوں کی معلومات جاری نہیں کیں۔ نہ ہی یہ بتایا گیا ہے کہ ہلاک اور زخمی ہونے والے افراد کی عمریں کیا ہیں۔

جس پارک میں فائرنگ کا واقعہ پیش آیا ہے یہ پارک کئی ہفتوں سے احتجاج کا مرکز بنا ہوا تھا۔ یہاں پر مظاہرین پولیس کی تحویل میں 25 مئی کو مینی ایپلس میں 46 سالہ سیاہ فام جارج فلائیڈ اور اس سے قبل 13 مارچ کو 26 سالہ سیاہ فام خاتون بریونا ٹیلر کی گھر کے اندر پولیس کے ہاتھوں ہلاکت کے خلاف احتجاج کر رہے تھے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube