Tuesday, October 20, 2020  | 2 Rabiulawal, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

امریکی جنگی طیارے ایف35 سے نیوکلر بم گرانے کی تصویر جاری

SAMAA | - Posted: Jun 24, 2020 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Jun 24, 2020 | Last Updated: 4 months ago

لاک ہیڈ مارٹن کا تیار کردہ دنیا کا جدید ترین جنگی طیارے ایف 35 سے فرضی ایٹم بم گرانے کی تصویر نے سوشل میڈیا پر نئی بحث کا آغاز کردیا ہے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق ایف 35 دنیا کا واحد طیارہ ہے جو نہ صرف ایٹمی میزائل بلکہ دیگر روایتی اسلحہ بھی لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ رپورٹس کے مطابق حال ہی میں امریکی دفاعی حکام کی جانب سے طیارے کو ایٹم بم گرانے کے استعمال کیلئے مزید مضبوط اور کار آمد بنانے کیلئے مزید تجربات کیے گئے ہیں۔

امریکا کے محکمہ دفاع کی جانب سے جدید ترین ایف 35 اے جنگی طیارے سے ایٹم بم فرضی طور پر گرانے کی تصاویر جاری کردی گئی ہیں۔ ایف 35 اے لائٹننگ ٹو اسٹیلتھ طیارے نے مشق کے دوران تھرمو نیو کلیئر گریویٹی بم گرایا۔

یہ پرواز کیلی فورنیا کے امریکی ایئر فورس کے بیس ایڈورڈز ایئرفورس بیس کے اوپر سے کی گئی۔

اس 50کلو ٹن وزنی بم کو طیارے کے اندرونی حصے میں بھی رکھا جاسکتا ہے تاکہ اس کی اسٹیلتھ صلاحیت بھی پوری طرح برقرار رہے۔ اگلے مرحلے میں یہ مختلف وزن کے ایٹم بم گرانے کا تجربہ کرے گا۔

طیارے کی صلاحتیوں سے متعلق امریکی دفاعی حکام کا کہنا ہے کہ سال 2023 میں اس طیارے کو نیوکلر سرٹی فیکیٹ جاری کیے جانے کا امکان ہے۔ 5تھ جنریشن کے حامل اس طیارے پر نیوکلیئر بم کی صلاحیت بڑھانے کا آغاز گزشتہ سال 2019 میں کیا گیا تھا۔

ایف 35 کی بم گرانے کی حالیہ نئی تصاویر ایف 35 جوائنٹ پروگرام آفس کی جانب سے جاری کی گئی ہیں، جو اس طیارے کی معاونت میں اس کی صلاحتیوں کو جانچ کرتا ہے۔ ادارے کی جانب سے بم گرانے کی تاریخوں کی تفصیلات بھی جاری کی گئی ہیں۔

تفصیلات میں طیارے اڑانے والے کچھ پائلٹس کے نام بھی ظاہر کیے گئے ہیں، تاہم کچھ پائلٹس کے ناموں کو خفیہ رکھا گیا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube