Wednesday, October 28, 2020  | 10 Rabiulawal, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

بھارت میں دہائیوں بعد طاقتور سمندری طوفان آج ٹکرائے گا

SAMAA | - Posted: Jun 3, 2020 | Last Updated: 5 months ago
SAMAA |
Posted: Jun 3, 2020 | Last Updated: 5 months ago

سمندری طوفان نِسرگ دہائیوں بعد شدید سمندری طوفان کی صورت میں آج بدھ 3 جون کو گجرات، مہاراشٹر اور ممبئی کے ساحلوں سے ٹکرائے گا۔

بھارتی محکمہ موسمیات نے خلیج عرب میں بننے والے دباو کے مد نظر وارننگ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ طوفان اگلے چند گھنٹوں میں سائیکلون اور پھر سپر سائیکلون میں تبدیل ہوسکتا ہے۔

امکان ہے کہ بدھ کو 100 سے 120 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے سمندری طوفان بھارت کے مغربی ساحل سے ٹکرائے گا، جس سے نئی تاریخ رقم ہوگی۔ ممبئی میں اس سے قبل 1882میں شدید ترین سمندری طوفان آیا تھا۔

بھارتی میٹ آفس کی جانب سے اس دوران شدید بارشوں، تیز ہواؤں، سمندری لہروں اور سمندری طوفان کی پیش گوئی کی گئی ہے جس سے ممبئی کے نشیبی علاقوں میں سیلاب آ سکتا۔ محکمے کے مطابق یہ سمندری طوفان اتنا ہی شدید ہو سکتا ہے جتنا کہ سائیکلون امپھان تھا جس نے تقریباً دو ہفتے قبل مغربی بنگال میں تباہی مچا دی تھی اور 90 افراد کو ہلاک کیا تھا۔

محکمہ موسمیات کے مطابق یہ طوفان ممبئی سے ٹکرانے کے بعد گجرات اور مرکز کے زیر انتظام علاقہ دمن کے ساحلی علاقوں کی طرف پہنچے گا۔

اس دوران نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس فورس (این ڈی آر ایف) کی 31 ٹیمیں مہاراشٹر اور گجرات میں تعینات کردی گئی ہیں۔ این ڈی آر ایف کے ڈائریکٹر جنرل ایس این پردھان نے میڈیا کو بتایا نیسرگ ایک خطرناک سمندری طوفان ہے اور ہمارا اندازہ ہے کہ اس دوران 90 سے 100 کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے ہوائیں چلیں گی۔ ہم نے احتیاط کے طورپر مہاراشٹر اور گجرات کے ساحلی علاقوں سے لوگوں کو محفوظ مقامات پر پہنچانا شروع کردیا ہے۔ 4 جون کی شام تک یہ سمندری طوفان کمزور پڑ جائے گا اور ہوا کی رفتار 60 سے 70 کلومیٹر فی گھنٹہ تک رہ سکتی ہے۔

ماہرین کے مطابق یہ طوفان نسرگ 110 فی کلو میٹر کی رفتار تک اپنے عروج پر پہنچے گا۔ یہ بات بھی یاد رہے کہ بھارتی شہر ممبئی سمندر کے ساتھ ایک نشیبی شہر ہے۔ یہ ایک انتہائی گنجان آؓاد شہر ہے۔ ممبئی کے نشیبی علاقے ذرا سے خراب موسم یا سمندری طوفان کی صورت میں بہت تیزی سے زیرِ آب آسکتے ہیں۔ اس مرتبہ یہ شہر کووِڈ-19 کے چیلنج کا سامنا کر رہا ہے، ریاست مہاراشٹر جس کا ممبئی دارالحکومت ہے، وہاں پوری ریاست کے ایک تہائی متاثر مریض درج کیے گئے ہیں۔ یہ دنیا کا آبادی کے لحاظ سے دوسرا بڑا میونسپل شہر ہے جس کی 2 کروڑ سے زیادہ آبادی ہے۔

شدید طوفان کے پیش نظر ممبئی شہر کو خطروں کی درجہ بندی کے لحاظ سے زرد درجہ بندی میں رکھا گیا ہے جس میں بعض علاقوں میں انتہائی شدید بارشوں سے لے کر بہت شدید بارشوں کے امکانات ہوں گے۔

ماہرین موسمیات کا کہنا ہے کہ یوں تو خلیج بنگال میں اکثر و بیشتر سمندری طوفان بنتے رہتے ہیں لیکن بحیرہ عرب نسبتاً پرسکون رہتا ہے تاہم پچھلے چند برسوں میں خلیج عرب میں بھی طوفانوں کے بننے کی رفتار تیز ہوگئی ہے۔ گزشتہ برس خلیج عرب میں جتنی تیزی اور جتنے تسلسل اور شدت کے ساتھ طوفان بنتے دکھائی دیے اتنا پچھلے ایک سو سے زیادہ برسوں کے دوران نہیں دیکھے گئے تھے۔ بھارتی محکمہ موسمیات کے مطابق 2019 میں خلیج عرب میں پانچ سمندری طوفان آئے جبکہ عام طور پر یہ تعداد ایک یا زیادہ سے زیادہ دو رہتی تھی۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ جولائی سال 2005 میں ممبئی کو اپنی تاریخ کی ایک دن کی شدید ترین بارشوں میں سے ایک کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ اس دن 14 گھنٹوں میں 94.4 سینٹی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی تھی۔ ان بارشوں سے آنے والے سیلاب میں سڑکیں زیرِ آب آگئیں تھیں، تمام ذرائع آمد و رفت اور بجلی کا نظام درہم برہم ہوگیا تھا، لاکھوں لوگوں کی زندگی مفلوج ہوگئی تھی۔ 500 سے زیادہ افراد بہہ گئے، ڈھہ جانے والی عمارتوں میں دفن ہوگئے، بجلی سے ہلاک ہوگئے یا پانی میں پھنس جانے والی گاڑیوں میں دم گھٹنے سے مر گئے تھے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube