ہوم   > بین الاقوامی

بھارت:کرونا پازیٹومبلغ نےہزاروں زندگیاں داوپرلگادیں

SAMAA | - Posted: Mar 28, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Mar 28, 2020 | Last Updated: 2 months ago

بھارت کے ایک مذہبی پیشوا بے احتیاطی کے باعث خود جان سے ہاتھ دھوبیٹھے اور 15 ہزار سے زائد افراد کی زندگیاں داؤ پر لگا گئے، جنہیں کرونا کے شبے میں قرنطینہ منتقل کردیا گیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسیوں کے مطابق 70 سالہ سکھ مذہبی مبلغ بلدیو سنگھ نے حال ہی میں اٹلی اور جرمنی کے دورے سے واپس آنے کے سیلف آئسولیشن میں رہنے کی ہدایات کو نظر انداز کرتے ہوئے بھارتی صوبے پنجاب کے درجنوں دیہاتوں میں تبلیغ کیلئے پہنچ گئے۔

بلدیو سنگھ کے آبائی علاقے بانگا کے ایک سینئر مجسٹریٹ گورو جین کا کہنا ہے کہ جن دیہاتوں کا انہوں نے دورہ کیا تھا انہیں 18 مارچ سے سیل کرکے قرنطینہ میں تبدیل کرنے تبدیل کرنے کا آغاز کیا گیا تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان دیہاتوں میں 15 سے 20 ہزار افراد ہیں جن کی میڈیکل ٹیمیں کڑی نگرانی کر رہی ہیں۔ مجسٹریٹ کے مطابق ان دیہاتوں کی قرنطینہ میں تبدیلی سے قبل بلدیو کے 19 قریبی ساتھیوں کے کرونا ٹیسٹ مثبت آچکے ہیں جبکہ 200 دیگر کے ٹیسٹ رپورٹس ابھی آنا باقی ہیں۔

ابتداء میں بلدیو سنگھ اور ان کے دو قریبی ساتھیوں نے کرونا وائرس سے شدید متاثرہ ممالک سے واپس آنے کے بعد حکومت کی جانب سے کچھ عرصہ خود کو لوگوں سے علیحدہ رکھنے کی ہدایت پر کان نہیں دھرے اور گروجی کے علیل ہونے تک ملک میں اپنے دورے جاری رکھے جس کے بعد بالآخر گروجی خود موت کی آغوش میں چلے گئے اور ان کے دونوں قریبی ساتھی بھی اب وائرس کے زیر اثر ہیں۔

بلدیو سنگھ کی اس بے احتیاطی اور بعد میں برامد ہونے والے نتائج نے ملک کو ششدر کردیا تھا۔ اس صورتحال پر کینیڈا میں مقیم ایک بھارتی گلوکار سدھو موس والا نے دو روز قبل ایک نغمہ ریلیز کیا جو اب تک یو ٹیوب پر لاکھوں افراد دیکھ چکے ہیں۔ اس نغمے کے بول کچھ یوں ہیں کہ ‘میں گاؤں میں موت کے سائے کی طرح منڈلاکر بیماری لگاتا رہا’۔ پنجاب پولیس نے بھی لوگوں کو ترغیب دی ہے کہ وہ یہ نغمہ بطور سبق سنیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube