Thursday, October 22, 2020  | 4 Rabiulawal, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

برطانیہ آج یورپی یونین سے باہر نکل جائیگا

SAMAA | - Posted: Jan 31, 2020 | Last Updated: 9 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 31, 2020 | Last Updated: 9 months ago
اے ایف پی

برطانیہ کا یورپی یونین سے باقاعدہ انخلا آج ہوجائے گا، جس کی منظوری یورپی پارلیمنٹ نے بھی دے دی ہے۔ کو اتحاد سے علیحدگی کے لیے جمعرات کے روز منظوری دی گئی۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق برطانیہ کو یورپی یونین سے علیحدہ کرنے کے معاہدے کی منظوری پر کوئی ناراض نہیں ہوا۔ ووٹنگ کے ذریعے یورپی پارلیمنٹ نے باہر نکلنے کے معاہدے کی منظوری دی، جس کے بعد یورپی یونین سے باہر نکلنے کے معاہدے پر دستخط برسلز میں ہوں گے۔

بریگزٹ معاہدے کی ووٹنگ کے دوران 13 اراکین پارلیمنٹ نے ووٹ نہیں دیا، اسکاٹ لینڈ پارلیمنٹ میں بھی آزادی کی قرارداد منظور کی گئی۔ آزادی کا ریفرنڈم برطانوی حکومت کی اجازت سے مشروط ہو گا۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ برطانیہ یورپی یونین سے 47 سالہ اتحاد توڑ رہا ہے۔ جمعہ کو برطانوی مقامی وقت کے شام 11 بجے یعنی پاکستان میں ہفتے کی صبح 4 بجے برطانیہ کی یورپی یونین سے عملی طور پر علیحدگی نافذ ہو جائے گی۔

جس مقام سے بریگزیٹ کا اعلان کیا گیا تھا۔ جمعہ کے روز سندرلینڈ کے اسی مقام پر برطانوی کابینہ کی علامتی میٹنگ بھی ہوگی۔ بریگزیٹ سے علیحدگی پر نومنتخب وزیراعظم بورس جانسن بریگزٹ کے بارے میں بیان بھی جاری کریں گے جس میں وہ واضح کریں گے کہ جس میں وہ بریگزٹ کی اہمیت پر بات کریں گے۔ اسی خطاب میں برطانیہ کے پسماندہ علاقوں کی ترقی کے لیے منصوبہ پیش کیے جانے کا بھی امکان ہے۔

علیحدگی کے بعد کیا ہوگا؟

یورپی یونین سے علیحدگی کا ایک روز میں مکمل نہیں ہوگا۔ معاہدے کے بعد برطانیہ نئے اور عبوری دور میں داخل ہوگا۔ اس عبوری دور کا اختتام 31 دسمبر کو ہوگا۔ ان11 ماہ تک برطانیہ میں یورپی قوانین لاگو رہیں گے اور لوگوں کی آزادانہ نقل وحرکت بھی ممکن ہوگی۔ اس دوران برطانیہ مستقبل میں یورپی یونین سے تعلق کے بارے میں امور طے کرے گا۔

جاپان اور امریکا سے معاہدے

یورپی یونین سے علیحدگی کے بعد برطانیہ کی جانب سے جاپان اور امریکا کے ساتھ بڑے پیمانے پر تجارتی معاہدوں اور معاشی مضبوطی کیلئے معاہدے بھی متوقع ہیں۔

برطانوی سیاسی جماعتیں

برطانیہ میں ٹوری حکومت کے زیادہ تراراکین بریگزٹ کے حامی ہیں، جب کہ اپوزیشن لیبرپارٹی اس بارے میں منقسم ہے۔ برطانیہ کی تیسری بڑی جماعت اسکاٹش نیشنل پارٹی بریگزٹ کی یکسر مخالف ہے اور اب وہ برطانیہ سے علیحدگی کے لیے اسی سال ریفرنڈم بھی کرانا چاہتی ہے۔

پاکستانیوں کیلئے بریگزیٹ اچھی خبر

برطانیہ کے یورپ سے بریگزٹ کے فیصلہ سے یورپی ممالک کے شہریوں کے مُستقبل پر کئی اثرات مُرتب ہوں گے ۔ پاکستانیوں کو بھی اس سے فائدہ ہوگا۔ لندن میں سماء کے نُمائندے مُرتضٰی کیانی نے برطانیہ کے معروف بیرسٹر راشد اسلم سے خصوصی گفتگو میں بتایا کہ برطانوی بریگزیٹ پاکستانیوں کے لئے سُنہری موقع ہے۔ یورپی یونین سے باہر آنے سے پاکستانیوں کے لئے امیگریشن قوانین میں نرمی آئے گی۔ طالبعلموں کے لئے بھی امیگریشن کے نئے قوانین مُتعارف کروائے جائیں گے۔

برطانیہ میں یونی ورسٹی سے کورس مکمل کرنےوالے طلبہ کو مزید دو سال کا ویزا بھی دیا جائے گا۔ آسٹریلین طرز پر نیا پوائنٹ سسٹم متعارف کروایا جارہا ہے۔ اس سسٹم کے تحت اگر برطانیہ میں پاکستانیوں کو نوکری کی پیش کش کی گئی ہے تو وہ آسکتے ہیں۔

برطانیہ سے جب یورپی شہریوں کا انخلا ہوگا تو نوکریاں کو مزید مواقع پیدا ہونگے۔ برطانیہ میں موجود یورپی باشندوں کے حقوق کو محفوظ بنایا گیا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube