ہوم   > بین الاقوامی

ايرانی صدر نے طیارہ گرانے پرفوج سے وضاحت طلب کرلی

SAMAA | - Posted: Jan 16, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Jan 16, 2020 | Last Updated: 1 month ago

فوٹو: اے ایف پی

يوکرين کے مسافر طيارے کو گرانے کے واقعے پر ايرانی صدر حسن روحانی نے فوج سے وضاحت طلب کر لی ہے۔

وزير خارجہ کا کہنا ہے انہيں اور صدر کو بھی واقعے سے بےخبر رکھا گيا تھا۔

تہران میں واقعے سے متعلق مظاہرے بھی جاری ہیں جس میں طلبہ نے سپريم ليڈر کے استعفے کا مطالبہ کیا ہے۔

برطانوي ميڈيا کے مطابق صدر حسن روحانی نے ايک بيان ميں کہا ہے کہ فوج واقعے کی مزید تفصیلات فراہم کرے کہ اس نے غلطی سے کس طرح ایک مسافر بردار طیارے کو مار گرایا۔

ايرانی صدر نے مشرق وسطیٰ ميں موجود يورپی ممالک کی فورسز کو بھی تنبيہہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشرق وسطیٰ ميں موجود امريکی اور يورپی فوجيں نکل جائيں۔ آج امريکی فوجی خطرے ميں ہيں، کل يہ خطرہ يورپی فورسسز کو بھی ہوسکتا ہے۔

دوسری جانب امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے طيارے پر ميزائل لگنے کی فوٹيج جاری کر دی اور دعویٰ کيا کہ يوکرئن کا طیارہ 30 سيکنڈ ميں دو ميزائلوں کا نشانہ بنا۔

غير ملکی ميڈيا کے مطابق طیارے کی تباہی کی ویڈیو بنانے والے شخص کو ايرانی فورسسز نے گرفتار کرليا ہے۔

بی بی سی کے مطابق ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای برسوں بعد جمعہ کا خطبہ دیں گے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
Iran, Hassan Rouhani, military to explain, Ukraine plane, middle east
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube