ہوم   > بین الاقوامی

امریکا میں زیرتربیت 20 سعودی اہلکار واپس بھیجنے کا فیصلہ

SAMAA | - Posted: Jan 14, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 14, 2020 | Last Updated: 2 months ago

وائٹ ہاؤس حکام نے امریکا میں فوجی تربیت حاصل کرنے والے 20 سے زائد سعودی کیڈٹ کو واپس بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔

گزشتہ ماہ ایک سعودی عرب کے ایک زیر تربیت کیڈٹ نے امریکی نیوی کے بیس پر فائرنگ کرکے 3 امریکی اہلکاروں کو ہلاک اور 8 کو زخمی کردیا تھا۔

حکام کے مطابق ملک سے نکالے جانے والے 20 سعودی اہلکاروں کے بارے میں تفتیشی افسران نے خدشات کا اظہار کیا ہے۔ تفتیشی افسران کا کہنا ہے کہ نیول بیس پر حملے سے قبل فائرنگ کرنے والے اہلکار اپنے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ ’ماس شوٹنگ‘ کی ویڈیوز دیکھتا رہا اور انتہا پسندی کی جانب مائل ہوا مگر اس کے ساتھیوں نے اس بارے میں امریکی حکام کو آگاہ نہیں کیا۔

وائٹ ہاؤس حکام کا کہنا ہے کہ سعودی اہلکاروں میں چند کو اس لیے ملک بدر کیا جارہا ہے کہ وہ آن لائن ’چائلڈ پورنوگرافی‘ دیکھنے میں ملوث رہے ہیں جبکہ دیگر کو آن لائن چیٹ رومز میں انتہا پسندی پر مبنی گفتگو کرتے ہوئے پایا گیا۔

امریکی جسٹس ڈیپارٹمنٹ سعودی اہلکاروں کے اخراج کا باقاعدہ اعلان کرے گا اور اس کے ساتھ ہی نیول بیس پر فائرنگ کی تحقیقات میں سامنے آنے والے حقائق بھی منظرعالم پر لائے گا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube