ہوم   > بین الاقوامی

میں سمجھا مودی جی اکاؤنٹ میں پیسے ڈال رہے ہیں

2 weeks ago

آپ نے کراچی میں فالودہ اور رکشہ والے کے اکاؤنٹس اور ان سے ملنے والے کروڑوں روپے کے بارے میں تو سنا ہوگا مگر بھارت میں بینکاری کی تاریخ کا ایسا حیرت انگیز واقعہ سامنے آیا ہے جو بیک وقت دلچسپ اور المناک بھی ہے۔

بھارتی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اسٹیٹ بینک آف انڈیا کے مدھیہ پردیش میں واقع ایک برانچ نے دو شہریوں کے اکاؤنٹ کھولے۔ ان دونوں کے نام ایک جیسے تھے اور بینک نے غلطی یا غفلت سے دونوں کا ایک ہی اکاؤنٹ کھول دیا۔

بینک کے مینیجر راجیش سنکر کے مطابق حکم سنگھ نامی دو صارفین نے اتفاق سے دو تین دن آگے پیچھے اکاؤنٹ کھولنے کی درخواستیں دیں اور بینک حکام نے دونوں کے اکاؤنٹ کھولے اور غلطی یا غفلت سے دونوں کو ایک ہی اکاؤنٹ نمبر دیا۔

اکاؤنٹ کھولنے کے بعد ایک حکم سنگھ مدھیہ پردیش سے روزگار کی تلاش میں ہریانہ چلا گیا اور اپنی کمائی ہر ماہ کے آخر میں بینک اکاؤنٹ میں جمع کرنے لگا اور ادھر مدھیہ پردیش میں رہنے والے دوسرے حکم سنگھ کے اکاؤنٹ میں خود بخود پیسہ آنے لگا۔

یہ المناک حقیقت اس وقت سامنے آئی جب ہریانہ جانے والے حکم سنگھ کافی عرصہ بعد بینک سے رقم نکالنے لگا تو اس میں صرف 35 ہزار بھارتی روپے پائے گئے جبکہ اس نے ایک لاکھ 40 ہزار روپے بینک میں جمع کروائے تھے۔

حکم سنگھ نے بینک عملہ سے شکایت کی تو انہوں نے معاملے کی چھان بین کے بعد دوسرے حکم سنگھ کو طلب کیا تو معلوم ہوا کہ پیسہ وہ نکال کر استعمال بھی کر رہا ہے۔

پیسہ استعمال کرنے والے حکم سنگھ نے بتایا کہ نریندر مودی نے وعدہ کیا تھا کہ وہ لوٹی ہوئی رقم واپس لیکر عوام میں تقسیم کریں گے۔ اس لیے مجھے لگا کہ میرے اکاؤنٹ میں مودی جی پیسے بھیج رہے ہیں۔ حکم سنگھ نے 6 ماہ کے دوران 86 ہزار روپے نکال کر خرچ کیے ہیں۔

متاثرہ حکم سنگھ نے الزام عائد کیا کہ بینک عملہ نے معاملہ چھپانے کی کوشش کی۔ دوسری جانب یہ معمہ ابھی تک حل نہ ہوسکا کہ مفت میں رقم نکال کر کھا جانے والے حکم سنگھ سے اب یہ رقم کیسے وصول کی جائے گی۔ متاثرہ حکم سنگھ کو بھی تاحال اس کی محنت کی کمائی نہ مل سکی ہے۔

 
TOPICS:

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں