ہوم   > بین الاقوامی

آئی ایس آئی چیف جنرل فیض حمید کا کابل کا دورہ

SAMAA | - Posted: Nov 12, 2019 | Last Updated: 5 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 12, 2019 | Last Updated: 5 months ago

کابل میں قائم پاکستانی سفارت خانے کے باہر کھڑے سیکیورٹی اہلکار

افغان حکام کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کی طاقت ور خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کے سربراہ لیفٹننٹ جنرل حمید نے افغانستان کا دورہ کیا۔ پاکستان کی جانب سے دورے سے متعلق کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا۔

افغان میڈیا کی جانب سے جاری اطلاعات کے مطابق انٹر سروسز انٹیلی جنس ایجنسی ( آئی ایس آئی ) کے سربراہ پیر کے روز افغان دارالحکومت کابل پہنچے، جہاں انہوں نے اعلی حکام سے ملاقاتیں کیں۔

آئی ایس آئی چیف کی کابل آمد کا مقصد دونوں ممالک کے درمیان حالیہ تناؤ کو ختم کرانا ہے۔ پیر کے روز ہونے والی ملاقات کابل میں پاکستانی سفارت خانہ بند کی جانب سے کونسلر سیکشن بند ہونے کے بعد پہلا باضابطہ رابطہ ہے۔ واضح رہے کہ افغان سیکیورٹی فورسز اور حکام کی جانب سے پاکستانی عملے کے ساتھ ہراسائی کے واقعات پر کونسلر سیکشن بند کردیا گیا تھا۔

افغان نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر کے ترجمان قابر اکمل کا کہنا ہے کہ ملاقات میں دونوں جانب سے تناؤ کی فضا کم کرنے اور تعلقات معمول پر لانے سے متعلق گفتگو ہوئی۔ ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ افغان نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر حمد اللہ مہب نے بھی آئی ایس آئی سربراہ سے ملاقات کی۔ ملاقات میں پاکستانی سیکریٹری خارجہ سہیل محمود بھی موجود تھے۔

کابل کی جانب سے متعدد بار پاکستان پر افغان طالبان کی حمایت کے الزامات بھی عائد کیے گئے ہیں، جنہیں پاکستان مسترد کرتا آیا ہے۔

 

جنرل فیض کی اس وقت کی تصویرجب انہوں نے اسلام آباد آئے افغان طالبان کے وفد سے ملاقات کی

پاکستان کی جانب سے آئی ایس آئی سربراہ جنرل فیض حامد کے دورے اور ملاقات سے متعلق کوئی بیان تاحال جاری نہیں کیا گیا۔

فیض آباد دھرنا

واضح رہے کہ آئی ایس آئی کے سربراہ بننے سے قبل فیض حمید کا نام سال 2017 میں فیض آباد میں ہونے والے دھرنے کے حوالے سے پہلی بار منظر عام پر آیا اور خبروں کی زینت بنا۔ ان خبروں پر اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایک موقع پر فیض آباد دھرنا کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے تھے کہ  فیض آباد دھرنے میں آئی ایس آئی کے ڈپٹی ڈائریکٹر میجر جنرل فیض حمید نے کیسے معاہدہ کر لیا؟۔

میجر جنرل سے لیفٹننٹ جنرل تک

لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید کو رواں سال جون میں ملک کے اہم ترین خفیہ ادارے انٹرسروسز انٹیلیجنس ایجنسی یعنی آئی ایس آئی کا نیا سربراہ مقرر کیا گیا۔

وہ لیفٹیننٹ جنرل عاصم منیر کی جگہ آئی ایس آئی سربراہ بنے، جو صرف 8 ماہ تک اس عہدے پر فائز رہے۔ لیفٹیننٹ جنرل عاصم منیر کو اکتوبر 2018 میں یہ ذمہ داری سونپی گئی تھی۔ انہیں اب کور کمانڈر گوجرانوالہ بنا دیا گیا تھا۔ میجر جنرل فیض حمید کو سال 2019 میں ہی لیفٹننٹ جنرل کے عہدے پر ترقی دی گئی تھی۔ اس سے قبل وہ جی ایچ کیو میں ایڈجوٹنٹ جنرل کے عہدے پر فائز تھے۔

 

بلوچ رجمنٹ سے تعلق رکھنے والے لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید اس سے قبل پنڈی میں 10 کور کے چیف آف اسٹاف، پنوں عاقل میں جنرل آفیسر کمانڈنگ اور آئی ایس آئی میں ہی ’سی آئی‘ یعنی کاؤنٹر انٹیلیجنس سیکشن کے ڈائریکٹر جنرل بھی رہ چکے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube