ہوم   > بین الاقوامی

میئر کے بال کاٹ کر گلیوں میں ننگے پیر گھمایا

2 weeks ago

جنوبی امریکا کے ملک بولیویا میں مشتعل شہریوں نے  میئر کو پکڑ کر اس کے بال کاٹ دیے اور ننگے پاؤں 16 گھنٹے گلیوں میں گھمانے کے بعد پولیس کے حوالے کردیا۔

جمہوریہ بولیویا جنوبی امریکا کا ایک ملک ہے جس کی سرحدیں شمال اور مشرق میں برازیل، جنوب میں پیراگوئے اور ارجنٹائن اور مغرب میں چلی اور پیرو سے ملتی ہیں۔

بولیویا میں 20 اکتوبر کو متنازع صدارتی انتخابات ہوئے جس کے بعد اپوزیشن نے دھاندلی کا الزام عائد کرکے ملک بھر میں مظاہرے شروع کردیے ہیں۔ پرتشدد احتجاج میں اب تک 3 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ احتجاج کا دائرہ پھیلتا جارہا ہے۔

عالمی خبر رساں اداروں کے مطابق جمعرات کو اپوزیشن سیاسی کارکنان 20 اکتوبر کے صدارتی انتخابات کے خلاف احتجاجی مظاہرے کر رہے تھے۔ اس دوران ایک گروہ نے وینٹو شہر میں ایک پل پر دھرنا دے دیا۔

دھرنے کے دوران انہیں اطلاع ملی کہ ایک دوسرے علاقے میں صدر کے حامیوں کے ساتھ جھڑپ میں اپوزیشن کے 2 کارکنان ہلاک ہوگئے ہیں۔

اطلاع سن کر مظاہرین مشتعل ہوگئے اور انہوں نے صدر کی حامی مقامی میئر پر حملہ کردیا اور اس کو اپنے ساتھ لے گئے۔ پولیس کے مطابق مظاہرین نے خاتون میئر کے بال زبردستی کاٹے، اس  پر لال رنگ چھڑک کر ننگے پاؤں گلیوں میں گھمایا اور آخر میں زبردستی استعفیٰ پر دستخط کروائے۔

اس کے بعد مظاہرین نے خاتون میئر کو پولیس کے حوالے کردیا۔ اہلکاروں نے انہیں موٹر سائیکل پر بٹھاکر مظاہرین کے ہجوم سے نکالا اور اسپتال منتقل کردیا ہے۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ خاتون میئر متنازع انتخابات کے نتیجے میں منتخب ہونے والے صدر کی حامی ہیں اور مظاہرین کی ہلاکت اس کی ایما پر ہوئی۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں