ہوم   > بین الاقوامی

جاپان کے نئے بادشاہ کی تاج پوشی

SAMAA | - Posted: Oct 22, 2019 | Last Updated: 7 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 22, 2019 | Last Updated: 7 months ago

تقریب میں صدر عارف علوی کی بھی شرکت

جاپان کے نئے بادشاہ نارو ہیتو کی  تاج پوشی کی پر وقار تقریب منقعد ہوئی جس میں صدر پاکستان عارف علوی نےبھی شرکت کی۔

ناروہیتو کے باقاعدہ تخت نشین ہونے کی تقریب میں دنیا بھر کے 180 سربراہوں کو مدعو کیا گیا جس میں نئے بادشاہ کو تاج پہنایا گیا۔

جاپان کے 85 سالہ سابق بادشاہ اکی ہیتو اپریل میں طبیعت کی خرابی کے باعث تخت سے دستبردار ہوگئے تھے جس کےبعد ولی عہد ناروہیتو نے یکم مئی کو نئے بادشاہ کی ذمہ داریاں سنبھال لی تھیں۔

یوں تو جاپان میں بادشاہ تادم مرگ تخت نشین رہنے کی روایت ہے تاہم ملک کی 200 سالہ تاریخ میں اکی یتو تخت چھوڑنے والے پہلے بادشاہ ہیں۔ واضح رہے کہ جاپان میں تاج پوشی کا جشن ایک ہفتے تک منایا جائے گا۔

جاپان میں شہنشاہ کا عہدہ علامتی ہے اور ان کے پاس حکومت کرنے کے لیے کوئی سیاسی طاقت نہیں ہوتی لیکن وہ قومی ہم آہنگی کی علامت ہوتے ہیں۔

جاپانی زبان میں کینجی تو شوکی نوگی کے نام سے اس تقریب کو جانا جاتا ہے جس میں نئے شہنشاہ کو روایتی شاہی ساز و سامان سے نوازا جاتا ہے۔

تقریب میں شاہی خاندان سے منسلک خواتین کی شرکت پر پابندی ہوتی ہے۔

جاپان کے نئے شہنشاہ 59 سالہ ناروہیتو کو پہلے ایک تلوار پیش کی گئی اور اس کے ساتھ ایک ہیرا دیا گیا۔ یہ دونوں اشیا جاپان کے شہنشاہوں کے خاندان میں نسلوں سے منتقل ہوتی رہی ہیں اور شاہی طاقت کی علامت ہیں۔

ان اشیا میں تیسرا اور سب سے اہم حصہ ایک شاہی آئینہ ہے اور ان تینوں کو ملا کر امپیرئیل ٹریژر یعنی شاہی خزانہ کہا جاتا ہے۔ ہیرو ہیتو جاپان کے 126 ویں بادشاہ ہیں۔ انہوں نے آکسفورڈ یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube