ہوم   > بین الاقوامی

کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے معافی مانگ لی

1 month ago

تصویر: ٹائم

کينيڈين وزيراعظم جسٹن ٹروڈو نے سال 2001 میں ایک پارٹی میں کے دوران چہرے کا رنگ تبدیل کر کے بنوائی جانے والی تصویر سامنے آنے کے بعد معافی مانگ لی ہے۔

یہ تصویر مشہورامریکی جریدے “ٹائم ” نے شائع کی۔ ٹروڈو کی یہ تصویر وینکوور کی ویسٹ پوائنٹ گرے نامی اکیڈمی میں “عریبیئن نائٹس ” کی تھیم سے منائی جانے والی ایک پارٹی کے دوران کھینچی گئی تھی۔

تصویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ تھیم کی مناسبت سے جسٹن ٹروڈو نے منہ اور ہاتھوں پرجلد سیاہ کرنے والا میک کرنے کے علاوہ الہ دین کا کاسٹیوم پہن رکھا ہے،  وہ اس وقت ایک اسکول ٹیچر تھے اور ان کی عمر 29 سال تھی۔

 

 

یہ تصویر ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب ٹروڈو دوبارہ کینیڈا کا وزیراعظم منتخب ہونے کے لیے 21 اکتوبر کو ہونے والے عام انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔

 

 

جسٹس ٹروڈو نے تصویر سامنے آنے کے بعد اپنے خلاف نسل پرستی کا الزام عائد کیے جانے پرمعافی مانگی ہے کیونکہ انہیں آزاد خیال پالیسیوں کا حامی تصور کیا جاتا ہے۔

 

جسٹن ٹروڈو آپ کا کھویا ہوا بھائی مل گیا

 

ٹروڈو نے معافی مانگتے ہوئے اپنے بیان میں کہا کہ مجھے اس فعل پر شدید ندامت ہے۔ یقیننا مجھے بہتر رویہ اختیار کرنا چاہیے تھا۔اس وقت مجھے سمجھ نہیں آئی کہ جو کچھ میں کر رہا ہوں نسل پرستانہ ہے۔ اب میں اپنے اس فعل کیلئے سب سے معافی مانگتا ہوں۔

 

 

کینیڈا کے وزیراعظم نے وضاحت کی کہ میں نے اسکول کی ایک اور تقریب کے دوران بھی براؤن فیس کے ساتھ ایونٹ میں حصہ لیا تھا جس پرشرمندگی محسوس کرتا ہوں۔

کینیڈین وزیراعظم کی جانب سے شاہد آفریدی کی حمایت

 

یاد رہے کہ  جسٹن ٹروڈو اپنے ملک کے علاوہ بھی ہردلعزیز شخصیت کے طور پر جانے جاتے ہیں۔ مذہبی رواداری ان کی شخصیت کا خاصہ ہے

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں