ہوم   > بین الاقوامی

مسئلہ کشمیر پر یورپی پارلیمنٹ میں 12برس بعد بحث

1 month ago

مسئلہ کشمیر یورپی پارلیمنٹ پہنچ گیا۔ یورپی پارلیمنٹ کے اراکین نے بھارت کو بتا دیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق بحال کرے، گرفتار سیاسی کارکنوں کو رہا کیا جائے۔ مسئلہ کشمیر پر دونوں ممالک بات چیت سے مسئلہ حل کریں۔

یورپی پارلیمنٹ میں کئی اراکین نے مقبوضہ کشمیر کی صورت حال قیامت خیز قرار دی۔ اراکین کا کہنا تھا کہ مقبوضہ وادی میں 10 لاکھ فوج موجود ہے۔ لبرل پارٹی کے اراکین نے بھارت کے تمام اقدامات کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے کہا کشمیریوں کو اپنی قسمت کا فیصلہ کرنے دیا جائے، دیگر اراکین پارلیمنٹ نے زور دیا کہ یورپ انسانی حقوق کے لیے کھڑا ہے۔

وزیر توپرائینن نے بھارت سے کشمیر میں انسانی حقوق بحال کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے کشمیر میں بڑی تعداد میں فوج بھیج رکھی ہے، وہاں بہت سے سیاسی کارکنوں کو گرفتار بھی کیا گیا ہے، بھارت اور پاکستان مسئلہ کشمیر بات چیت سے حل کریں۔

گرین پارٹی کے ایم ای پی نے کہا ہے کہ بھارت کشمیری عوام کے بنیادی حقوق بحال کرے، دوسری جانب یورپی یونین کے اجلاس میں دیگر کئی اراکین نے بھی بھارت کے اقدامات کی مذمت کی۔

پارلیمنٹ اراکین نے مزید کہا کہ مسئلہ کشمیر کے پائیدرار حل کے لئے کشمیری عوام کو حق خود ارادیت دیا جائے، کشمیر کی صورت حال انتہائی نازک ہے۔ مقبوضہ وادی میں انسانی المیہ پیدا ہوچکا ہے۔ بھارت کے 5 اگست کےاقدام نے صورت حال کو انتہائی خراب کردیا ہے۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں