ہوم   > بین الاقوامی

بھارتی سپریم کورٹ کا مقبوضہ کشمیر سے کرفیو ہٹانے کا حکم

1 month ago

بھارتی سپریم کورٹ نے بڑا فیصلہ دیتے ہوئے مودی حکومت کو مقبوضہ وادی سے کرفیو ہٹانے کا حکم دے دیا۔

بھارتی ذرائع ابلاغ سے جاری خبروں کے مطابق پیر کے روز بھارتی سپریم کورٹ نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے خلاف دائر درخواستوں کی سماعت کی۔

 

اس موقع پر بھارتی سپریم کورٹ نے حکومت کو حکم دیتے ہوئے کہا کہ وہ فوری طور پر مقبوضہ وادی سے کرفیو ہٹا کر حالات معمول پر لائے، جب کہ بھارتی اور جموں و کشمیر کی حکومت کو آرٹيکل 370 سے متعلق حلف نامہ بھی پيش کرنے کا حکم دیا گیا۔

چیف جسٹس بھارتی سپریم کورٹ راجن گوگوئی کا اپنے فیصلے میں مزید کہنا تھا کہ حکومت کانگریس رہنما غلام نبی کو بھی فوری بارہ مولہ، اننت ناگ اور سری نگر دورے کی اجازت دی جائے۔ چیف جسٹس بھارتی سپریم کورٹ کا مزید کہنا تھا کہ اگر انہیں ضروری محسوس ہوئی تو وہ خود بھی وادی کا دورہ کریں گے۔

کیس کی مزید سماعت 30 ستمبر تک ملتوی کردی گئی ہے، تاہم اس کا تفصیلی فیصلہ جاری نہیں کیا گیا۔ واضح رہے کہ رواں سال 5 اگست کو بھارتی حکومت نے آئینی دفعہ 370 کو ختم کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کر دی تھی اور کشمیر کو دو حصوں میں تقسیم کردیا تھا۔

یاد رہے کہ بھارتی وزیر داخلہ امیت شاہ نے پارلیمان کے ایوان بالا (راجیہ سبھا) میں اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ لداخ کو جموں و کشمیر سے الگ کر کے وفاق کے زیر انتظام علاقہ (یونین ٹیریٹری) بنایا جارہا ہے لیکن وہاں اسمبلی نہیں ہوگی، جب کہ جموں و کشمیر کو بھی علیحدہ یونین ٹیریٹری بنایا جا رہا ہے تاہم وہاں اسمبلی ہوگی۔

پاکستان کا ردعمل

دوسری جانب وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مقبوضہ کشمیر سے متعلق بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے کا خیرمقدم کیا ہے۔

 وزیر خارجہ نے کہا کہ عدالتی حکم سے پاکستانی موٴقف کو تقویت ملی ہے، غلام نبی آزاد کے ساتھ میڈیا کے وفد کو بھی سرینگر جانے کی اجازت ہونی چاہئے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر امریکا اور یورپ کو بھی شدید تشویش ہے۔

 
TOPICS:

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں
 
 
 
 
 
 
 
 
مقبول خبریں