ہوم   > بین الاقوامی

شاہ سلمان کی بیٹی کو10 ماہ قیداور جرمانے کی سزا

1 month ago

فرانسیسی عدالت نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی بہن شہزادی حسہ بنت سلمان کو 10 ماہ قید کی معطل سزا سنادی، مزدور پر تشدد اور تضحیک آمیز رویے پر ان پر بھاری جرمانہ بھی عائد کیا گیا۔

اے ایف پی کے مطابق سعودی فرمانروا شاہ سلمان کی بیٹی اور ولی عہد محمد بن سلمان کی بہن شہزادی حسہ بنت سلمان پر 2016ء میں فرانس کے دورے کے دوران ایک پلمبر پر تشدد کے الزام میں مقدمہ زیر سماعت تھا۔

حسہ بنت سلمان نے 2016ء میں پیرس کے سیاحی مقام فوش ایونیو پر واقع لگژری اپارٹمنٹ میں رہائش کے دوران پلمبر اشرف عید کو اپنے واش روم کی تصاویر لینے پر گارڈز رانی سعیدی سے پٹوایا اور مارنے کی دھمکیاں بھی دیں، شہزادی نے تضحیک آمیز رویہ اپناتے ہوئے ورکر کو پاؤں چومنے پر بھی مجبور کیا تھا۔

فرانسیسی عدالت نے 45 سالہ سعودی شہزادی حسہ پر ان کی غیر موجودگی میں مقدمہ چلایا، وہ کبھی بھی عدالت میں پیش نہیں ہوئیں، انہیں 10 ماہ قید کی معطل سزا کے ساتھ 11 ہزار ڈالر جرمانہ بھی عائد کیا تھا۔

سرکاری وکیل نے عدالت سے 6 ماہ قید اور 5480 ڈالر جرمانے کی سزا کا مطالبہ کیا تھا تاہم کورٹ نے سعودی شہزادے کو مزید سخت سزا سنائی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق اشرف نے دوران سماعت عدالت کو بتایا کہ جب وہ واش روم میں بیسن ٹھیک کرنے پہنچا تو اس نے کچھ تصاویر لیں جو اس کے کام کا حصہ تھا تاہم شہزادی اسے تصویریں لیتے دیکھ کر طیش میں آگئیں اور اپنے گارڈ کو بلا کر تشدد کروایا، یہ بھی کہا کہ ’’اس کتے کو جان سے مار دو، اسے زندہ رہنے کا کوئی حق نہیں‘‘۔

اشرف کا کہنا ہے کہ اسے کئی گھنٹے یرغمال بنایا گیا، جس کے بعد پولیس نے 2 گھنٹوں تک شہزادی سے پوچھ گچھ کی، تاہم 3 دن بعد شہزادی حسہ بنت سلمان ملک چھوڑ کر چلی گئیں۔

فرانسیسی عدالت نے شہزادی حسہ کے باڈی گارڈ رانی سعیدی کو 8 ماہ قید کی معطل سزا سنادی جبکہ ان پر 5 ہزار یورو جرمانہ عائد کیا گیا، رانی سعیدی نے عدالت میں کارروائی کا سامنا کیا تاہم معطل سزا کے باعث اسے قید نہیں کیا جاسکے گا

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں