ہوم   > بین الاقوامی

اقوام متحدہ ہيومن رائٹس کا کشمیرمیں بھارتی مظالم پر اظہارِتشويش

1 week ago

فوٹو: اے ایف پی

اقوام متحدہ ہیومن رائٹس کونسل کی 42 ویں بیٹھک میں ہائی کمشنر يو اين ايچ آر مشیل باشیلے نے مقبوضہ جموں و کشمیر کی صورتحال پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔

مشيل باشيلے نے بھارت سے خصوصی اپیل کی کہ لاک ڈاؤن یا کرفیو ختم کرکے لوگوں کی بنیادی ضروریات تک رسائی یقینی بنائی جائے اور جن لوگوں کو حراست میں لیا گیا ہے ان کے بھی تمام حقوق کا احترام کیا جائے۔

ہائی کمشنر نے کہا کہ ذرائع ابلاغ اور پُرامن اجتماعات پر پابندی ہے جبکہ مقامی قائدین اور کارکنوں کو گرفتار کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے مودی حکومت کے یکطرفہ اقدامات کو بھی یکسر مسترد کیا۔

وزیراعظم کا کشمیر پر اقوام متحدہ سے کمیشن بنانےکا مطالبہ

مشیل باشیلے نے کہا یہ ضروری ہے کہ کشمیر کے لوگوں سے مشاورت کی جائے اور انہیں فیصلہ سازی کے ہر اس عمل میں شامل کیا جائے جو ان کے مستقبل پر اثر انداز ہو۔

بھارتی ریاست آسام میں 19 لاکھ مسلمانوں کی شہریت ختم کرنا بھی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی قرار دیا۔

پاکستانی دفتر خارجہ نے ہیومن رائٹس کونسل اجلاس میں یو این ایچ آر کمشنر کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہوئے اسے خوش آئند قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں مسلط کردہ کرفیو کو مسلسل 36 واں روز ہے جس کی وجہ سے وادی میں موبائل فون اور انٹرنیٹ سروس معطل ہے جبکہ غذا سمیت ادویات کی قلت ہوگئی ہے۔

 
TOPICS:

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں