Thursday, October 22, 2020  | 4 Rabiulawal, 1442
ہوم   > Latest

بورس جانسن برطانیہ کے نئے وزیراعظم ہوں گے

SAMAA | - Posted: Jul 23, 2019 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Jul 23, 2019 | Last Updated: 1 year ago

بورس جانسن برطانیہ کے نئے وزیراعظم نامزد ہوگئے، کنزرویٹو پارٹی نے انہیں اپنا لیڈر منتخب کرلیا۔ پہلے خطاب میں بورس جانسن نے بریگزٹ کا معاملہ حل کرنے کا عزم کرتے ہوئے کہا ہے کہ قوم کو متحدہ اور اپوزیشن لیڈر جیریمی کوربائن کو شکست دوں گا۔

برطانیہ میں وزیراعظم کے انتخاب کی دوڑ ختم ہوگئی، بورس جانسن نے کنزرویٹو پارٹی کے سربراہ کا انتخاب جیت لیا، وہ برطانیہ کے اگلے وزیراعظم ہوں گے، وہ کل (بدھ کو) اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے۔

پارٹی لیڈر شپ کے انتخاب میں بورس جانسن کو 92 ہزار 153 ووٹ ملے جبکہ ان کے مخالف جیریمی ہنٹ 46 ہزار 656 ووٹ حاصل کرسکے۔

بریگزیٹ ڈیل میں ناکامی پر برطانیہ کی سابق وزیراعظم تھریسا مے نے پارتی صدارت اور وزارت عظمیٰ کا عہدہ چھوڑ دیا تھا، جس کے بعد کنزرویٹو پارٹی کے عہدیداروں نے ووٹ کے ذریعے اپنا نیا لیڈر چنا، کنزرویٹو پارٹی کو پارلیمنٹ میں اکثریت حاصل ہے۔

تھریسا مے نے بورس جانسن کو کنزرویٹو پارٹی کا نیا سربراہ اور وزیراعظم بننے پر مبارکباد دی ہے، ان کا کہنا ہے کہ اب ہمیں مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے تاکہ بریگزٹ ڈیل مکمل کی جاسکے، جو پورے ملک کیلئے بہترین ہوگی، آپ کو میری مکمل حمایت حاصل رہے گی۔

جونسن نے اپنی پہلی تقریر میں کہا کہ میرے انتخاب پر سوال اٹھانے والوں کو بتا دینا چاہتا ہوں کہ کنزرویٹو پارٹی پچھلے 200 سالوں سے پورے ملک کیلئے بہتری کی خواہاں رہی ہے۔

انہوں نے بریگزٹ ڈیل کو تکمیل تک پہنچانے اور جیریمی کوربائن کو  شکست دینے کا وعدہ کیا۔

بریگزٹ ڈیل اور بورس جانسن کے انتخاب کیخلاف ویسٹ منسٹر کے باہر احتجاجی مظاہرے جاری ہیں، پلے کارڈز اٹھائے مظاہرین بورس جانسن اور بریگزٹ ڈیل کیخلاف نعرے لگارہے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube