لندن میں پُرتشدد واقعات، ٹرمپ نے صادق خان کو ’مصیبت‘ قرار دے دیا

June 16, 2019

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک مرتبہ پھر لندن کے میئر صادق خان کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا ہے کہ وہ قوم کے لیے رسوائی کا باعث اور برطانیہ کے دارالحکومت لندن کو تباہ کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ پاکستانی نژاد صادق خان لندن کے میئر ہیں اور گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران لندن میں 5 پرتشدد واقعات پیش آئے جن میں تین افراد ہلاک اور تین زخمی ہوئے ہیں۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے ان واقعات کی آڑ میں صادق خان کو آڑے ہاتھوں لیا۔

لیبر پارٹی کے رہنما جیریمی کوربن نے ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان کو ’انتہائی ناگوار‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ٹرمپ ان افسوسناک واقعات کو میئر پر تنقید کرنے کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔

ٹرمپ نے اتوار کو ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ صادق خان ’ایک مصیبت ہیں‘ اور لندن کو جلد از جلد ایک نئے میئر کی ضرورت ہے۔

ٹرمپ نے تنقید کا سلسلہ یہاں نہیں روکا اور کچھ دیر بعد دوبارہ ٹوئیٹر کا رخ کرتے ہوئے کہا کہ صادق خان قوم کے لیے باعثِ ذلت ہیں اور لندن شہر کو تباہ کر رہے ہیں۔

صادق خان کے ترجمان نے ڈونلڈ ٹرمپ کے جواب میں کہا ہے کہ میئر مشکل گھڑی میں متاثرین کے ساتھ ہیں اور وہ اپنا وقت اس نوعیت کی ٹویٹس کا جواب دینے میں ضائع نہیں کریں گے۔

ترجمان نے کہا کہ میئر کی پوری توجہ شہر میں بسنے والے لوگوں کی مدد کرنے پر مرکوز ہے۔

ٹرمپ اور صادق خان کے درمیان لفظی جنگ کا آغاز اس وقت ہوا جب گزشتہ برس لندن کے میئر نے بعض مسلمان ممالک سے آنے والے افراد پر امریکی صدر کی سفری پابندیوں پر تنقید کی تھی۔

صادق خان نے اخبار میں ایک مضمون لکھا تھا جس میں انہوں نے 1930 اور 1940 کے دور کے یورپی آمروں سے امریکی صدر کا موازنہ کیا تھا۔ اس وقت میئر کے ترجمان نے ٹرمپ کے ٹوئٹس کو بچکانہ اور امریکی صدر کے عہدے کے برخلاف قرار دیا تھا۔

گزشتہ برس جولائی میں لندن کے دورے کے دوران ڈونلڈ ٹرمپ نے صادق خان پر دہشت گردی کے خلاف اقدامات میں ناکامی کا الزام عائد کیا تھا اور امیگریشن کو لندن میں جرائم کی بڑھتی ہوئی لہر کی وجہ قرار دیا تھا۔