حالات بات چیت کیلئے موزوں نہیں، ہمارا اختیار مزاحمت ہے، ایرانی صدر

May 21, 2019

ایرانی صدر نے امریکا کے ساتھ بات چیت اور سفارتکاری کی تائید کردی، تاہم کہتے ہیں کہ اس کیلئے موجودہ حالات موزوں نہیں۔

ایرانی خبر ایجسنی کے مطابق ایران کے صدر حسن روحانی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ بات چیت اور سفارت کاری کی تائید کرتے ہیں مگر موجودہ حالات میں ان دونوں امور کو قبول نہیں کیا جا سکتا، آج صورتحال بات چیت کرنے کیلئے موزوں نہیں ہیں لہٰذا ہمارا آپشن مزاحمت ہے۔

مزید جانیے : جنگ ہوئی تو نتیجہ ایران کا خاتمہ ہوگا، امریکی صدر

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ روز اپنے ٹویٹ میں دعویٰ کیا تھا کہ اگر جنگ ہوئی تو نتیجہ ایران کا خاتمہ ہوگا۔ جس پر ایرانی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ نسل کشی کی دھمکیوں سے ایران کا خاتمہ نہیں ہوا۔

ایرانی صدر نے دو ہفتے قبل باور کرایا تھا کہ ان کے ملک کو غیر معمولی جنگ درپیش ہے، انہوں نے ملک میں سیاسی گروپوں کے درمیان یک جہتی کا مطالبہ کیا تھا تاکہ موجودہ حالات سے نمٹا جا سکے جو روحانی کے نزدیک عراق کے ساتھ جنگ کے دوران ملکی صورتحال سے زیادہ دشوار ہوچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : ٹرمپ کے طنز سے ایران ختم نہیں ہوگا، جواد ظریف

دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ اُن کا ملک ایران کے ساتھ بات چیت کیلئے کوشاں نہیں ہے، اگر تہران مذاکرات کا ارادہ رکھتا ہے تو اس پر لازم ہے کہ اس سلسلے میں پہلا قدم اٹھائے۔