Monday, October 19, 2020  | 1 Rabiulawal, 1442
ہوم   > Latest

بھارتی فضائیہ کا مگ 27 لڑاکا طیارہ گر کر تباہ

SAMAA | - Posted: Mar 31, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Mar 31, 2019 | Last Updated: 2 years ago

بھارتی فضائیہ کا ایک اور مگ 27 لڑاکا طیارہ جودھ پور میں گر کر تباہ ہوگیا۔ بھارتی ذرائع ابلاغ سے جاری خبروں کے مطابق بھارتی فضائیہ (آئی اے ایف) کا لڑاکا طیارہ راجھستان کے علاقے جودھ پور کے قریب گر کر تباہ ہوگیا۔ ترجمان بھارتی فضائیہ کے مطابق طیارے نے  ایئر بیس سے معمول کے...

بھارتی فضائیہ کا ایک اور مگ 27 لڑاکا طیارہ جودھ پور میں گر کر تباہ ہوگیا۔

بھارتی ذرائع ابلاغ سے جاری خبروں کے مطابق بھارتی فضائیہ (آئی اے ایف) کا لڑاکا طیارہ راجھستان کے علاقے جودھ پور کے قریب گر کر تباہ ہوگیا۔ ترجمان بھارتی فضائیہ کے مطابق طیارے نے  ایئر بیس سے معمول کے مشن پر اڑان بھری، تاہم اڑان بھرنے کے کچھ دیر بعد ہی طیارہ سرہونی سے 180 کلو میٹر گر کر تباہ ہوگیا۔

بھارت نے اپنے ہی ہیلی کاپٹر کو پاکستانی طیارہ سمجھ کر مار گرادیا

حادثہ کے بعد پولیس سمیت دیگر سیکیورٹی فورسز نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔

مودی کے بار بار بیان سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ بھارت اپنی فضائی قوت میں اضافے کے لیے امریکی اور روسی طیاروں کی بجائے فرانسیسی طیارے ڈیسالٹ رافیل اور جوائنٹ یورو فائٹر ٹائیفون پراجیکٹ خریدنے میں دلچسپی رکھتا ہے۔ مگ یعنی (میکوین گوریوک) ابھی بھی سری لنکا ، کاغزستان اور بھارتی فضائیہ کے استعمال میں ہیں، جب کہ روس اور یوکرائن میں ان طیاروں کو گراونڈ کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ تین ہفتے قبل بھی بھارتی فضائیہ کا مگ 21 جنگی طیارہ راجھستان کے علاقے بیکانیر ڈسٹرکٹ میں گر کر تباہ ہوگیا تھا۔ حادثے میں پائلٹ کاک پٹ سے بچ نکلنے میں کامیاب ہوگیا تھا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق تباہ ہونے والے اس مگ طیارے کی قیمت ڈھائی کروڑ ڈالر  تھی۔

 

حالیہ حادثے میں تباہ ہونے والا طیارہ مگ 27 یو پی جی ہے، جو روسی ساختہ ہے۔ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ بھارتی فضائیہ کا بڑا حصہ ان روسی ساختہ مگ طیاروں پر مشتمل ہے۔ قبل ازیں گزشتہ ماہ 27  فروری کو پاکستان ایئر فورس نے بھارت کے 2 مگ 21 طیارے مار گرا کر ایک پائلٹ کو پکڑا تھا، تاہم بھارت کا دعویٰ ہے کہ پاک فضائیہ نے ایک ہی طیارہ گرایا، جب کہ دوسرا تکنیکی خرابی کے باعث حادثے کا شکار ہوا۔ بھارت کو ان طیاروں کے تباہ ہونے سے 5 کروڑ ڈالر سے زائد کا نقصان ہوا تھا۔

 

پاکستان اور بھارت کی اس ’فضائی جھڑپ‘ سے پہلے انڈیا کے ایئر شو میں آتشزدگی کے باعث سیکڑوں گاڑیاں جل کر تباہ ہوگئیں تھیں جب کہ جھڑپ کے بعد انڈین ایئر فورس کے دفتر میں آگ بھڑک اٹھی تھی۔ رواں سال یکم فروری کو بنگلور میں انڈین ایئرفورس کا طیارہ حادثے کا شکار ہوا جس میں 2 پائلٹ ہلاک ہوگئے۔

 

گزشتہ برس 4 ستمبر کو ایک مگ 27 طیارہ جودھپور میں گرگیا تھا۔ پانچ جون 2018 کو ایک ایک طیارے گجرات میں حادثے کا شکار ہوا جس میں ایئر کموڈور سنجے چوہان جان کی بازی ہار گیا۔ اس کے علاوہ بھی 2018 میں بھارتی ایئرفورس کے متعدد طیارے اور ہیلی کاپٹر حادثات کے نذر ہوئے۔

 

سال 2011 میں روسی حکام اس بات کی تصدیق کی تھی کہ بھارت نے روس کے ساتھ ایک معاہدے کے نتیجے میں 12 بلین یورو مالیت کے مِگ 35 لڑاکا طیاروں کی ترسیل کی پیشکش مسترد کر دی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube