کرائسٹ چرچ،2مساجد پر حملہ،49سے زائد نمازی شہید،متعدد زخمی

March 15, 2019

نیوزی لینڈ میں 2 مسجد پر فائرنگ کے واقعہ میں 49 افراد جاں بحق، جب کہ متعدد زخمی ہوگئے۔ مسجد میں نماز کیلئے موجود بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی محفوظ رہے۔

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی ایک مسجد میں نماز جمعہ کے وقت مسلح شخص داخل ہوا اور خود کار ہتھیار سے اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی جس سے مسجد میں موجود 49 افراد جاں بحق ہوگئے۔ نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کی جانب سے پریس کانفرنس میں جاں بحق افراد کی تصدیق کی گئی۔

غیر ملکی ذرائع ابلاغ کے مطابق مسجد میں بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم کے کچھ کھلاڑی بھی نماز جمعہ کی ادائیگی کیلئے موجود تھے، جو حملے میں محفوظ رہے۔  بنگلا دیشی ٹیم کے کھلاڑیوں کو مسجد کے پچھلے دروازے سے بمشکل نکالا گیا، جہاں سے انہوں نے تیزی سے نکل کر جان بچائی۔

 

حکام کے مطابق نماز جمعہ کی ادائیگی کیلئے پانچ سو سے زائد افراد مسجد میں موجود تھے ۔ پندرہ گاڑیوں میں سوار پولیس اہلکاروں نے بچ جانے والے نمازیوں کو بحفاظت باہر نکالا  ۔ کرائسٹ چرچ کے تمام اسکولوں میں لاک ڈاؤن کردیا گیا ہے۔ بچوں کو اسکول سے باہر نہ نکلنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ انتظامیہ کی جانب سے اسپتالوں کے عملے کو باہر نہ نکلنے کی ہدایت کی گئی ہے، جب کہ معمول کے اپوائنٹمنٹ بھی منسوخ کردیئے گئے ہیں۔

 

عینی شاہدین کا کہنا ہےکہ فائرنگ کے واقعے میں متعدد افراد کو گولیاں لگی ہیں جن کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ عینی شاہدین کے مطابق متعدد افراد نے مسجد سے بھاگ کر جان بچائی۔ حملے کی اطلاع ملتے ہی اسپتالوں میں ایمر جنسی نافذ کردی گئی ہے۔

نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کے مطابق آج کا دن ملک کی تاریخ کا سیاہ ترین دن ہے۔ سماء سے گفت گو میں پاکستانی ہائی کمشنر کا کہنا تھا کہ نیوزی لینڈ میں اس سے قبل ایسا کوئی واقعہ رونما نہیں ہوا۔ حملے میں کسی پاکستانی کی شہادت یا زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ملی۔

 

حملے کے بعد علاقے میں موجود گرجا گھر اور تعلیمی اداروں کو بھی بند کردیا گیا ہے۔