بھارتی سپریم کورٹ نے ہاتھ اٹھا لیے

Samaa Web Desk
September 12, 2018

بھارتی سپریم کورٹ نے جھوٹے حلف ناموں کیخلاف قانون سازی کا حکم دینے سے معذرت کرلی۔

بھارتی میڈیا کی جانب سے جاری خبروں کے مطابق بھارتی سپریم کورٹ نے جھوٹے حلف نامے داخل کرانے والوں کے خلاف پارلیمنٹ کو قانون سازی کا حکم دینے سے معذرت کرلی، لیکن ساتھ ہی یہ اعتراف بھی کیا ہے کہ یہ عمل کرپشن کے دائرے میں آتا ہے۔

بھارتی سپریم کورٹ کے بینچ نے بی جے پی لیڈر اور ایڈووکیٹ ایشونی کمار کی درخواست کی سماعت کرتے ہوئے یہ اعتراف کیا کہ انتخابات کے دوران جھوٹا حلف نامہ داخل کروانا ’کرپٹ ایکٹیوٹی‘ ہےاور اس مسئلے کو سنجیدہ لینا چاہیے۔

بھارتی سپریم کورٹ کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہ پارلیمنٹ کو یہ حکم نہیں دے سکتی کہ جھوٹا حلف نامہ داخل کرانے والے شخص کو انتخابات میں حصہ لینے سے روکا جائے۔

بی جے پی لیڈر نے جھوٹے حلف نامے داخل کرانے والوں کے خلاف کارروائی کی درخواست دی تھی۔