پاکستان کی افغان صدارتی محل پر حملے کی مذمت

Samaa Web Desk
August 21, 2018

پاکستان کی جانب سے عید الضحی کے موقع پر صدارتی محل پر حملے کی شدید مذمت کی گئی ہے۔  حملے کے وقت افغان صدر اشرف غنی عید کے اجتماع سے خطاب کر رہے تھے۔

افغان ذرائع ابلاغ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق کابل میں صدر اشرف غنی کے عید کے اجتماع سے خطاب کے دوران دہشت گردوں نے صدارتی محل پر راکٹوں سے حملہ کیا۔

سیکیورٹی فورسز کی جانب سے جوابی کارروائی میں 2 دہشت گردوں کو مارنے کا دعوی کیا گیا ہے۔ حملے کے بعد علاقے میں افغان فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان جھڑپیں جاری ہیں، جب کہ علاقہ دھماکوں اور فائرنگ کی آوازوں سے گونج اٹھا۔ غیر ملکی ایجنسی کا کہنا ہے کہ صدارتی محل پر راکٹ حملہ طالبان نے کیا ہے۔ تاہم کسی گروپ کی جانب سے فی الحال حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی۔

 موصول اطلاعات کے مطابق حملہ صبح 9 بجے کیا گیا۔ حملے کے وقت محل کے عقبی حصے سے دھویں کے بادل اٹھتے دیکھائی دیئے۔ حملے کے بعد ڈپلومیٹک انکلیو پر ہیلی کاپٹروں کی نچلی پروازیں بھی جاری ہیں۔ واضح رہے کہ سعودی عرب اور مشرق وسطی سمیت مختلف ممالک میں آج عید الاضحی منائی جا رہی ہے۔

دوسری جانب پاکستان نے افغان صدر محل پر عید الاضحی کے موقع پر راکٹ حملوں کی شدید مذمت کی ہے۔ نو منتخب وزیراعظم عمران خان کا مذمتی بیان میں کہنا تھا کہ بزدلانہ کارروائی شکست خوردہ ذہنیت کی عکاس ہے، بزدلانہ سوچ کےخلاف افغان حکومت اور عوام کے ساتھ ہیں۔