Friday, August 7, 2020  | 16 Zilhaj, 1441
ہوم   > بین الاقوامی

اسامہ بن لادن کے سابق ذاتی محافظ گرفتار

SAMAA | - Posted: Jun 27, 2018 | Last Updated: 2 years ago
Posted: Jun 27, 2018 | Last Updated: 2 years ago

جرمنی میں پولیس نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پولیس نے ایک شدت پسند کو گرفتار کیا ہے جس کے بارے میں شبہہ ہے کہ وہ القاعدہ تنظیم کے بانی اسامہ بن لادن کا ذاتی محافظ رہ چکا ہے۔ جرمن روزنامے “بیلڈ” کا کہنا ہے کہ سامے اے کو ملک سے بے دخل کر دیا جائے گا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی نے جرمن میڈیا میں شائع خبروں پر رپورٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ رواں برس جرمن میڈیا میں یہ رپورٹیں آئی تھیں کہ جرمن انٹیلی جنس اداروں کی جانب سے 42 سالہ تیونسی “سامی اے” کو ممکنہ خطرہ قرار دینے کے باوجود وہ سوشل ویلفیئر کی سہولت سے فائدہ اٹھا رہا تھا۔

پولیس کے ترجمان کے مطابق بوخم شہر میں حکام نے پولیس سے مطالبہ کیا تھا کہ سامے اے کو حراست میں لیا جائے اور مذکورہ شخص نے کوئی مزاحمت نہیں کی۔

جرمن وزیر داخلہ ہورسٹ زیہوفر نے امیگریشن حکام کو ہدایت کی تھی کہ سامے اے کی بے دخلی کے لیے جلد اقدامات کیے جائیں۔  رپورٹس کے مطابق سامی کو آئندہ کچھ روز میں ان کے آبائی ملک ڈی پورٹ کردیا جائے گا، تاہم سامی اپنے آبائی ملک جانے کیلئے رضا مند نہیں۔

جرمن حکام کا کہنا ہے کہ سامی کی یہاں موجودگی لوگوں کیلئے خطرہ ہے۔ بیلڈ اخبار کی ایک سابقہ رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ جرمن حکام 2006ء سے اس تیونسی باشندے کی بے دخلی کی کوشش کر رہے ہیں تاہم سامی کے اپنے ملک میں تشدد کا نشانہ بننے کا امکان اس معاملے میں رکاوٹ بنا رہا۔ سامی اے 1997ء سے جرمنی کے شمال مغربی شہر بوخم میں رہ رہا ہے۔

واضح رہے کہ سال 2001 میں امریکا میں ہونے والے حملوں میں القاعدہ کے ملوث ہونے کے شواہد منظر عام پر آئے تھے، جس کے بعد امریکا کی جانب سے اسامہ بن لادن جو نائن الیون حملوں کا ماسٹر مائنڈ تھا، سے امریکا کے حوالے کرنے کا مطالبہ کیا گیا، تاہم اس وقت افغانستان میں برسر اقتدار طالبان حکومت نے اسامہ بن لادن کو امریکا کے حوالے کرنے سے انکار کردیا تھا، جس کے بعد عالمی منظر عامہ تبدیل ہوا اور امریکا نے دہشت گردی کے خلاف عالمی جنگ کا اعلان اور آغاز کرتے ہوئے افغانستان پر چڑھائی کی اور طالبان حکومت کو بے دخل کیا، تاہم اس تمام تر مہم جوئی کے باجود اسامہ بن لادن امریکا کے ہاتھ نہ لگ سکا۔

بعد ازاں 2011 میں پاکستانی علاقے ایبٹ آباد میں امریکا فوجیوں کی جانب سے امریکی نیوی سیل نے خفیہ آپریشن کیا ، جس میں اسامہ بن لادن کو مارنے کا دعویٰ کیا گیا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube