شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ کا پہلاغیر ملکی دورہ

March 28, 2018

بیجنگ/ پیانگ ینگ : شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان نے چین کا پہلا غیر ملکی دورہ کرکے دنیا کو حیران کردیا۔ کم جونگ ان نے بیجنگ میں چینی صدر شی پن سے ملاقات کی۔ ملاقات میں متعدد امور پر بات چیت کی گئی۔

چینی خبر ایجنسی کے مطابق کم جونگ ایٹمی ہتھیاروں کے خاتمے کے لیے پر عزم ہیں اور امریکا اورشمالی کوریا کے درمیان بات چیت چاہتے ہیں۔

کم جونگ ان نے کہا کہ جزیرہ نما کوریا سے جوہری ہتھیاروں کے خاتمے کا مسئلہ حل ہوسکتا ہے اور خطے میں امن اور استحکام کا ماحول پیدا کیا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ چینی صدر سے باہمی دلچسپی کے امور پر سمجھوتے سے مطمئن ہوں،یہ میری سنجیدہ ذمہ داری تھی کہ پہلا غیر ملکی دورہ چین کا کروں۔

مبصرین کے مطابق ملاقات میں امریکی صدر ٹرمپ اورکم جونگ کی ممکنہ ملاقات پربھی بات ہوئی ہوگی،دورےمیں کم جونگ ان کی اہلیہ بھی ہمراہ تھی۔ جنوبی کورین میڈیا کا دعویٰ ہے کہ کم جونگ ان کی اپریل میں جنوبی کوریا کے صدر سے ملاقات متوقع ہے، جب کہ مئی میں ان کی امریکی صدرٹرمپ سے ملاقات متوقع ہے اور چینی صدر شی نے شمالی کوریا کے دورے کی دعوت قبول کرلی۔

انہوں نے کہا کہ چین اورشمالی کوریاکےاچھےتعلقات قائم رہیں گے۔ روسی میڈیا کے مطابق شمالی کوریا کے سپریم لیڈر25مارچ کو چین پہنچے تھے اور آج تک قیام کیا،2011 میں اقتدار سنبھالنے کے بعد شمالی کوریا کے لیڈر کا یہ پہلا غیر ملکی دورہ تھا۔

کم جونگ ان کی بیجنگ سےروانگی کی بعددورےکی خبرجاری کی گئی۔ امریکی میڈیا کے مطابق چین نے وائٹ ہاؤس کو کم جونگ ان کے دورے کی تفصیل سے آگاہ کیا۔ وائٹ ہاوس کے مطابق بیجنگ نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو چینی صدر کے ذاتی پیغام سے بھی اگاہ کیا ،شمالی کوریا پر زیادہ سے زیادہ دباؤ کی مہم کی وجہ سے مذاکرات کا ماحول پیدا ہورہا ہے۔