خط میں سفید سفوف ملنے پرامریکی صدرکی بہو اسپتال منتقل

خط میں سفید سفوف ملنے پرامریکی صدرکی بہو اسپتال منتقل

Samaa Web Desk
February 13, 2018

امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کی بہو کو ایک خط ملنے کے بعد اسپتال منتقل کردیا گیا۔ خط میں سفید سفوف کی موجودگی کے باعث وینیسا ٹرمپ کو حفاظتی اقدامات کے تحت اسپتال کے جایا گیا۔

امریکہ میں پولیس کے مطابق سفید پاوڈر والے ایک خط کا لفافہ کھولنے کے بعد صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی بہو ونیسا ٹرمپ کو حفاظتی اقدامات کے تحت ہسپتال لے جایا گیا ہے۔

امریکی پولیس کے مطابق خط ڈونلڈ ٹرمپ کے بڑے بیٹے ٹرمپ جونئیر کے نام پر تھا جس پر ان کے مین ہٹن میں واقع اپارٹمنٹ کا پتہ درج تھا۔ خط ٹرمپ جونیئر کی ساس اور وینیسا کی ماں کو ملا، وینیسا نے اسے کھولا تو اندر سے صرف سفید پاؤڈر نکلا۔

نیویارک پولیس ڈیپارٹمنٹ کے مطابق اطلاع ملنے پر وینیسا ٹرمپ اور دیگر دو افراد کو حفاظتی نقطہ نظر سے فوری طور پر اسپتال پہنچایا گیا۔ خط سے ملنے والا سفید پاؤڈر جانچ کرنے پر بےضرر نکلا۔

ٹرمپ جونیئرنے واقعے سے متعلق ٹویٹ کرتے ہوئے اسے ناگوارقراردیا اوربتایا کہ ان کا خاندان خیریت سے ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ جونیئر اپنے والد کے ساتھ کاروبار کرتے ہیں، ان کی شادی نومبر 2005 میں سابق فیشن ماڈل وینیسا ہیڈن سے ہوئی۔دونوں کے 5 بچے ہیں۔ ٹرمپ جونیئر نے گزشتہ سال ستمبر میں اپنی اہلیہ اور بچوں کی حفاظت کیلئے سیکرٹ سروس کی خدمات لینا چھوڑ دی تھیں تاہم ایک ہفتے بعد ہی سیکرٹ سروس نے پھر سے ذمہ داریاں سنبھال لی تھیں۔

ترجمان وائٹ ہاؤس کے مطابق واقعے کے بعد صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ونیسا ٹرمپ جونیئر سے بات چیت کی۔ امریکی سیکرٹ سروس معاملے کی مزید تحقیقات کر رہی ہے۔

واضح رہے کہ سال 2001 میں امریکہ میں ڈاک کے ذریعے قانونی ماہرین اور صحافیوں کو انتھراکس بھیجا گیا تھا جس سے 5 افراد جان سے چلے گئے تھے۔