بھارت بھرمیں نچلی ذات کے ہندؤوں کا احتجاج،مظاہرے پھوٹ پڑے

January 3, 2018

نئی دہلی/ ممبئی/ پونے : بھارت نچلی ذات کے ہندؤ دلتوں کے احتجاج اور مظاہروں نے بھارت بھر میں فسادات برپا کردئیے، مرکزی شہر ممبئی میں نظام زندگی برہم برہم ہوگیا، ہزاروں پروازیں معطل، اسکول کالجز بند اور سڑکیں ویران ہوگئیں۔

بھارتی ذرائع ابلاغ سے جاری خبروں کے مطابق بھارتی شہر پونے سے شروع ہونے والا دلت برادری کا احتجاج مرکزی شہر ممبئی تک پہنچ گیا ہے۔

 

 

دلتوں کے احتجاج کے باعث پونے اور دیگر شہروں کی طرح ممبئی میں بھی نظام زندگی معطل ہوگئی۔

 

 

 

ممبئی میں نچلی ذات سے تعلق رکھنے والے ہزاروں دلتوں نے احتجاجی مظاہرے کیے اور گاڑیوں پر پتھراؤ کرکے ٹریفک کی روانی میں رکاوٹ ڈالی اور گاڑیوں کے شیشے توڑ ڈالے۔ فسادات اور مظاہرے شدت اختیار کرتے ہوئے نزدیکی شہر تک پہنچ گئے، جہاں بیشتر تشدد کے واقعات رپورٹ کیے گئے ہیں۔

احتجاج اور مظاہروں میں شدت ایک شخص کی ہلاکت کے خلاف مزید بڑھی۔ پولیس کے مطابق دلت مظاہرین نے ممبئی کے مختلف علاقوں میں گاڑیوں پر پتھراؤ کیا، جبکہ شہر کی ریل کے مرکزی ٹریک پر ٹرین سروس میں رکاوٹ ڈال کر ٹرین سروس بھی روک دی گئی ہے۔ دلت رہنماؤں نے کل ممبئی سمیت مہاراشٹر ریاست میں مزید احتجاجی مظاہروں کی کال دے دی ہے۔

پیر کو روز بھی پونہ میں دو گروپوں کے درمیان ہونے والے فسادات کی آگ نے آج بھی ممبئی سمیت مختلف شہروں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ پونہ میں دلتوں اور دوسری ذات کے لوگوں کے درمیان ہونے والی جھڑپ میں ایک دلت کی موت کے بعد ریاست مہاراشٹر کے مختلف شہروں منجملہ ممبئی اور تھانے میں زبردست پرتشدد مظاہرے ہوئے۔

فسادات کا آغاز کب ہوا

پونہ میں فساد اس وقت شروع ہوا جب برٹش پیشوا لڑائی کی دو سو ویں سالگرہ منائی جارہی تھی- پونہ میں دوگروپوں کے درمیان ہونے والے فسادات کا دائرہ ممبئی تھانے، اورنگ آباد اور عثمان آباد سمیت مہاراشٹر کے مختلف شہروں میں پھیل گیا۔

مہاراشٹر کی پولیس کا کہنا ہے کہ دلتوں کی جماعت ریپبلکن پارٹی آف انڈیا، آر پی آئی کے مشتعل کارکنوں نے ممبئی کے گھاٹ کوپر، پوئی، چیمبور، گونڈی، ملنڈ اور تھانے سمیت متعدد مقامات پر توڑ پھوڑ کی اور کئی بسوں کو آگ لگا دی۔ صورتحال کو کشیدہ دیکھ کر دوکانداروں نے اپنی دوکانیں بند کر دیں جبکہ مظاہرین نے کئی مقامات پر سڑکوں کو بند کر دیا۔ ممبئی کی لوکل ٹرینوں کو بھی کافی دیر تک مظاہرین نے بند رکھا۔

پرتشدد مظاہروں اور ہر طرح کے ناخوشگوار واقعے کے خوف سے ممبئی کے اسکولوں اور کالجوں میں چھٹیاں کردی گئیں، جبکہ دلتوں کی جماعت آر پی آئی نے بدھ کو پورے مہاراشٹر کو بند کرنے کا اعلان کیا ہے - پرتشدد مظاہروں میں جہاں دسیوں افراد زخمی ہوئے ہیں وہیں پولیس نے بڑی تعداد میں لوگوں کو گرفتار کر لیا۔

دلتوں نے مخالف گروہ پر، بھیم راؤ امبیڈکر کی مورتی توڑنے کا بھی الزام عائد کیا ہے - حزب اختلاف کی جماعت کانگریس پارٹی کے صدر راہول گاندھی نے مہاراشٹر میں ذاتی بنیادوں پر ہوئے فسادات کا ذمہ دار بی جے پی اور آر ایس ایس کو قرار دیا ہے۔

صورت حال کی سنگینی اور حساسیت کا انداز اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ سماجی رابطوں کی سائٹ فیس بک اور بھارتی شہریوں کی جانب سے صرف ایک گھنٹے میں ہزاروں میسجز، تصاویر اور ویڈیوز شئیر کی گئی ہیں، جس میں پریشان لوگوں اور فسادات کرنے والوں کو باآسانی دیکھا جا سکتا ہے۔ سماء

Email This Post
 

:ٹیگز

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.