مسلمانوں کی نسل کُشی، آنگ سان سوچی ایک اور فیصلہ

September 13, 2017

روہنگیا مسلمانوں کی نسل کُشی جاری ہے آنگ سان سوچی نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، بحران پر غور کے لیے سلامتی کونسل ہنگامی اجلاس کر رہی ہے۔

مغرب کی تنقید پرآنگ سان سوچی خفا ہوگئیں، اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس میں شرکت سے انکار کر دیا ، جنرل اسمبلی سے گزشتہ سال خطاب میں سوچی نے روہنگیا مسلمانوں کیخلاف حکومتی اقدامات کی حمایت کی تھی ۔

ایک ترجمان نے روئٹرز کو بتایا شاید سوچی کو میانمار میں زیادہ اہم امور نمٹانے ہیں، روہنگیا مسلمانوں کے ریاستی نسل کُشی پر سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس ہونے کو ہے ۔

اجلاس کا اعلان اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کمشنر کے اُس بیان کے بعد کیا گیا ہے، جس میں انہوں نے کہا روہنگیا مسلمانوں کا نسلی طور پر صفایا کیا جا رہا ہے ۔

رخائن سے جان بچاکر نکلنے والے روہنگیا مسلمانوں کی تعداد تین لاکھ ستّر ہزار ہوگئی ہے، جو بنگلہ دیشی کیمپوں میں مقیم ہیں، انڈونیشیا نے مزید امدادی سامانا مہاجرین کیمپ پہنچا دیے ہیں ۔ سماء

  Email This Post

 

:ٹیگز

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.