طالبان شوریٰ کوئٹہ پشاورمیں موجود ہے،امریکی ہزرہ سرائی

SAMAA | - Posted: Aug 27, 2017 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Aug 27, 2017 | Last Updated: 4 years ago

کابل : امریکی جنرل نکلسن نے ایک بار پھر پاکستان پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ طالبان کی اعلیٰ قیادت اور شوریٰ ممبران کوئٹہ اور پشاور میں موجود ہیں۔ افغان ٹی وی چینل ٹولو کو انٹرویو میں امریکی کمانڈنگ جنرل نکلسن نے ایک بار پھر پاکستان پر دہشت گردوں کی مدد اور پناہ...

کابل : امریکی جنرل نکلسن نے ایک بار پھر پاکستان پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ طالبان کی اعلیٰ قیادت اور شوریٰ ممبران کوئٹہ اور پشاور میں موجود ہیں۔

افغان ٹی وی چینل ٹولو کو انٹرویو میں امریکی کمانڈنگ جنرل نکلسن نے ایک بار پھر پاکستان پر دہشت گردوں کی مدد اور پناہ دینے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا جانتا ہےکہ افغان طالبان کی لیڈر شپ پشاور اورکوئٹہ میں موجود ہے۔

 

افغانستان میں امریکی کمانڈر جنرل جان نکلسن نے کرتے ہوئے مزید کہا ہے کہ پاکستان کی جانب سے ان کی مدد کی جا رہی ہے، دہشت گردوں اورجنگجووں کی مدد ختم کرنا ہوگی، امریکا کی قومی سلامتی افغانستان میں کامیابی سےوابستہ ہے۔

 

ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں کی پناہ گاہوں سے متعلق پاکستان اور امریکی حکومت کے درمیان نجی طور پر بات چیت کی گئی تھی لیکن ان کے خلاف کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی، دہشت گردوں اور عسکریت پسندوں کی حمایت میں کمی آئی ہے تاہم اسے ختم ہونا چاہیے۔

ایک سوال کے جواب میں جنرل جان نکلسن کا کہنا تھا کہ افغانستان کے مسئلے کا سفارتی حل ممکن ہے لیکن ملک میں جاری فوجی کوششیں جاری رہیں گی اور امریکا افغان حکومت کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لیے فوجی صلاحیتوں میں اضافہ کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ میری توجہ افغانستان میں جاری سرگرمیوں پر مرکوز ہیں، لیکن دیگر حکام پاکستان میں موجود ان دہشت گردوں کی پناہ گاہوں کے معاملات کو دیکھ رہے ہیں۔

امریکی کمانڈر کا دعویٰ تھا کہ ’کوئٹہ شوریٰ اور پشاور شوریٰ پاکستان کے شہروں کی نشاندہی کرتی ہیں اور ہم جانتے ہیں کہ طالبان رہنما ان علاقوں میں موجود ہیں۔ سماء

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube