Monday, January 17, 2022  | 13 Jamadilakhir, 1443

کرونا کااومی کرون ویرینٹ پچھلےویرینٹس سےزیادہ خطرناک نہیں،اینتھونی فاؤچی

SAMAA | - Posted: Dec 10, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Dec 10, 2021 | Last Updated: 1 month ago

امریکی ڈاکٹر اینتھونی فاؤچی نے دعویٰ کیا ہے کہ کرونا وائرس کا اومیکرون ویرینٹ پچھلے ویرینٹس سے زیادہ خطرناک نہیں ہے تاہم اس کی سنگینی جاننے کےلیے کئی ہفتے درکار ہونگے۔

غیرملکی خبرایجنسی سے بات کرتےہوئے امریکی صدرجوبائیڈن کے چیف میڈیکل ایڈوائزاینتھونی فاؤچی نے اومیکرون ویرینٹ کے حوالے سے اہم امور پر روشنی ڈالی۔انھوں نے بتایا کہ اومیکرون ویرینٹ پچھلے ویرینٹ ڈیلٹا سے زیادہ جلدی پھیلتا ہے۔ اس ویرینٹ سے متعلق کئے جانے والی تحقیقات کے نتائج  چند ہفتے میں آئیں گے۔ تاہم انھوں نے کہا کہ یہ ڈیلٹا ویرینٹ سے زیادہ مہلک نہیں ہے۔

انھوں نے بتایا کہ جنوبی افریقا میں سامنے آنے والے کیسز میں دیکھا گیا ہے کہ وائرس سے متاثرہ مریضوں اور اسپتال میں داخل ہونے والوں کی شرح میں واضح فرق ہے۔

اینتھونی فاؤچی کا کہنا تھا کہ اگرچہ ابھی اس ویرینٹ کی سنگینی ابتدائی مراحل میں ہے تاہم جن لوگوں میں یہ علامات دیکھی گئی ہیں وہ قدرے نوجوان تھے اور انھیں اسپتال لے جانے کی ضرورت نہیں تھی اور مزید نتائج سامنے آنے میں کچھ ہفتے درکار ہونگے۔

امریکی سائنسدان کا کہنا تھا کہ اومیکرون ویرینٹ سے اگر شدید بیماریاں نہیں ہوتیں اور مریضوں کی بڑی تعداد کو اسپتال لےجانے کی ضرورت نہیں پڑتی تو یہ بہترین بات ہوتی ہے۔

اومیکرون ویرینٹ اب تک 38 ممالک میں سامنے آچکا ہے۔ ابھی تک اس ویرینٹ سے مریضوں کی بڑے پیمانے پر اموات سامنے نہیں آئی ہیں تاہم اس کی 30 سے زائد میوٹیشنز پر ماہرین حیران ہیں۔ ابھی تک اس ویرینٹ کے بننے کی وجوہات سامنے نہیں آسکی ہیں۔

انھوں نے خبردار کیا کہ ویکسین شدہ افراد کو زیادہ محتاط رہنے کی ضرورت ہے کیوں کہ ہجوم میں انھیں یہ علم نہیں ہوتا کہ کتنے لوگ ویکسین شدہ ہیں۔ انھوں نے دوران سفر بھی ماسک پہنے کی ہدایت کی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
Omicron variant,corona virus,vaccine updates,US doctor
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube