ہوم   > Latest

بلوچستان کے ینگ ڈاکٹرز کی حکومت کو دھمکی

2 months ago

بلوچستان کے ینگ ڈاکٹرز نے حکومت نے معطل کیے گئے ڈاکٹروں کو بحال اور ڈاکٹروں کے خلاف ایف آئی آر واپس نہیں لی تو ایمرجنسی کے علاوہ تمام سروسز معطل کردیں گے۔

وائی ڈی اے بلوچستان کے نومنتخب صدر ڈاکٹریاسراچکزئی جنرل سیکرٹری ڈاکٹر حنیف لونی اور دیگر نے سول اسپتال کوئٹہ میں مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہو ئے کہا کہ سول اسپتال کے گائنی وارڈ میں مشتعل افراد نے داخل ہو کر خاتون ڈاکٹرز پر تشدد کیا اور خوف وہراس پھیلایا۔

اس واقعے کے خلاف ینگ ڈاکٹرز نے ٹراما سینٹرمیں احتجاج کیا۔ وزیر صحت بلوچستان اور وزیراعلیٰ کے مشیر برائے کھیل اسپتال کے دورے پر آئے تو ان کے سامنے بھی گائنی وارڈ کا واقعہ رکھا گیا  تاہم انھوں نے ڈاکٹرز کی بات سننے سے انکار کردیا۔

کوئٹہ سمیت بلوچستان کے اسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال،مریضوں کو مشکلات

اس کے بعد حکومت نے ڈاکٹروں کو معطل اور 3 ڈاکٹروں کیخلاف ایف آئی آر درج کروائی۔ ان کا کہنا تھا کہ محکمہ صحت کے اربوں روپے کے بجٹ کے باوجود سرکاری اسپتالوں میں ایک سرنج تک نہیں ملتی، سہولیات نہ ملنے پر عوام ڈاکٹروں پر اپنا غصہ نکالتے ہیں۔

ینگ ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ ان حالات میں ڈاکٹرز خوف اور تشدد کی فضاء میں فرائض انجام نہیں دے سکتے ہیں،اگر حکومت نے معطل کیے گئے ڈاکٹروں کو بحال نہ کیا اور ایف آئی آر واپس نہیں لی تو ٹراما سینٹر ، آپریشن تھیٹر سمیت سرکاری اسپتالوں میں تمام سروسز معطل کردیں گے۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں
 
 
 
 
 
 
 
 
مقبول خبریں