جسم میں پانی کی کمی کو پورا کرنے والا پھل

May 14, 2019

کیا آپ کو معلوم ہے کہ میٹھا میٹھا خربوزہ انسانی جسم میں پانی کی کمی کو پورا کرتا ہے۔ گرمیوں میں اس کا استعمال انتہائی مفید ہے۔

جی ہاں خربوزہ وہ پھل ہے جس کی میٹھی خوشبو دل کو لبھا لیتی ہے۔ موسم گرما کی آمد کے ساتھ ہی خربوزے کی فصل بھی تیار ہو جاتی ہے اور جیسے ہی گرمی کی شدت میں اضافہ ہوتا ہے ویسے ہی اس کی مٹھاس میں مزید اضافہ ہو جاتا ہے۔

 

کیا آپ کو معلوم ہے کہ خربوزے کا استعمال آپ کو لو اور گرمی کی شدت سے بچاتا ہے۔ یہ نہ صرف انسانی جسم کی نشوونما کے لیے ضروری ہے بلکہ یہ مختلف بیماریوں سے حفاظت میں بھی اہم کردار اداکرتا ہے۔

آج کل مارکیٹ میں عام خربوزے سے ذرا مختلف چائنیز خربوزہ بھی خوب فروخت ہو رہا ہے۔ یہ پھل95 فیصد تک مختلف وٹامنز اور منرلزکا مجموعہ ہے۔ گرمی میں خربوزہ کھانے سے جسم کو بھرپور توانائی حاصل ہوتی ہے۔ خربوزے کے چھلکے بھی حد درجہ مفید ہیں۔ اس کے بیج بھی بے حد مفید ہیں۔ طاقت کے لئے چاروں مغز میں خربوزے کے بیج بھی شامل کئے جاتے ہیں۔

 

معدے کی تیزابیت کے خاتمے کیلئے خربوزے کے پانی کی مقدار نظام انہضام کے لئے نہایت نفع بخش ہے۔ اس میں شامل منرلز معدے کی تیزابیت کے خاتمہ میں معاون ثابت ہو سکتے ہیں۔ کینسر کے علاج کیلئے بھی خربوزے میں شامل کروٹینائڈ نامی پروٹین کینسر سے بچاﺅ کی قدرتی دوائی ہے اور پھیپھڑوں کے کینسر کے خطرات کو بہت حد تک کم کر دیتا ہے۔ خربوزہ کینسر کے ان بیجوں کو ہی مار دیتا ہے، جو بعد ازاں انسانی جسم پر مضبوطی سے حملہ آور ہو سکتے ہیں۔

ہارٹ اٹیک سے بچاﺅ میں بھی خربوزہ میں شامل ایک خاص جزو (اڈینوسائن) خون کے خلیوں کو جمنے نہیں دیتا اور اگر ایسا نہ ہو تو یہ چیز بعد ازاں ہارٹ اٹیک کے امکانات بڑھا دیتی ہے۔ خربوزہ جسم میں خون کی گردش کو معمول پر رکھتا ہے، جس سے ہارٹ اٹیک یا اسٹروک جیسی بیماریوں کے امکانات نہایت کم ہو جاتے ہیں۔ جلدی صحت جلدی صحت کی برقراریت اور بہتری کے لئے خربوزہ نہایت عمدہ غذا ہے۔

خربوزہ میں شامل پروٹین جلد کو نہ صرف خوبصورت و ملائم بناتے ہیں بلکہ جلدی بیماریوں سے حفاظت بھی کرتے ہیں۔ خربوزہ کا استعمال گردوں کو صاف کرتا ہے اور گردے میں جمی ہوئی کثافتوں کو بھی دور کر دیتا ہے اور اگر خربوزہ کو لیموں کے ساتھ ملا کر استعمال کیا جائے تو یہ یورک ایسڈ جیسی تکلیف میں بھی آرام پہنچاتا ہے۔ 90 فیصد پانی پر مشتمل یہ پھل سینے کی جلن میں بھی اکسیر کی حیثیت رکھتا ہے۔