سندھ کا ایڈز کنٹرول پروگرام ناکارہ ہونے لگا

November 7, 2018

سندھ میں ایچ آئی وی ایڈز کے 56 ہزارمریضوں کے باوجود ایڈز کنٹرول پروگرام پرعمل نہیں ہورہا۔اس پروگرام کے تحت صرف 7000 مریضوں کا ہی علاج جاری ہے ۔

ایچ آئی وی ایڈز جان لیوا مرض ہے۔ اس مرض کا شکار تیس سالہ وقاص بھی ہے جو سرنج سے نشہ کرتا تھا لیکن تین سال قبل علاج نے اس کی زندگی بدل دی۔ اب یہ دیگر نشہ آور افراد کو راہ راست پر لانے کوشش کر رہا ہے۔

سندھ میں چھپن ہزار ایڈز کے مریضوں میں صرف سات ہزار مریضوں کا ہی علاج جاری ہے جب کہ دیگر کا علاج کیسے ممکن ہو گا پروگرام منیجر بھی بتانے سے قاصر ہیں۔

پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے رہنما ڈاکٹر قیصر سجاد کہتے ہیں کہ سندھ میں ایچ آئی وی اور ایڈز کے لاکھوں مریض ہیں لیکن اس ایڈز کنٹرول پروگرام کے پاس وسائل نہیں کہ اس مرض کو کنٹرول کر سکیں۔

ماہرین کے مطابق عطائی ڈاکٹرز،بیوٹی پارلر اور سرنج کا نشہ کرنے والے افراد اس مرض کا سب سے زیادہ شکار ہیں۔