سائنسدانوں نے خواتین میں پولی سسٹک سنڈروم کی وجہ دریافت کرلی

May 15, 2018

خواتین میں بانجھ پن سے متعلق مسائل کی سب سے بڑی اورعام وجہ پولی سسٹک اووریز ہیں۔ نئی تحقیق سے سائنسدانوں نے اس بات کا پتہ لگایا ہے کہ پولی سسٹک اووری سنڈروم کی وجہ اور اس کا حل کیا ہے۔

پیدائش سے قبل ہارمونزکا عدم توازن بعد میں خواتین میں پولی سسٹک اووری سنڈروم ( پی سی اوز) کا باعث بن سکتا ہے جو آگے چل کر بانجھ پن میں بھی بدل سکتا ہے۔ امریکی جریدے نیو سائنٹسٹ میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے اس مسئلے کا حل تلاش کر لیا ہے اور رواں سال کے آخر تک اس حوالے سے تجربات کیے جائیں گے۔

دنیا بھر میں ہرپانچ میں سے ایک خاتون پی سی اوز کا شکار ہے جن میں سے پچھتر فیصد کو ماں بننے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اگر آپ پولی سسٹک اووریز کا شکار ہیں تو جسم میں ہارمونز کا تناسب بہت زیادہ ہونے کے علاوہ اووری میں سسٹ، ماہواری میں بےقاعدگی اورذیابیطس سے متعلق مسائل بھی درپیش کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔

پی سی اوز ہونے کی بنیادی وجہ کیا ہے، اس بات کا اب تک علم نہیں ہوسکا لیکن خواتین میں ہارمونز کے حوالے سے یہ سب سے اہم مسئلہ ہے۔ اس میں مبتلا ماں بننے کی خواہشمند خواتین کیلئے علاج موجود ہے لیکن کامیابی کی شرح 30 فیصد ہے۔

اب فرانسیسی نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ اینڈ میڈیکل ریسرچ کے مطابق پیدائش سے پہلے پی سی اوز کا پتہ لگایا جا سکتا ہے۔ اس میں مبتلا حاملہ خواتین میں اینٹی ملیرین ہارمون کی مقدار دیگر خواتین کے مقابلے میں تیس فیصد زائد ہوتی ہے۔ حاملہ چوہیا پر تجربے کے دوران اینٹی ملیرین ہارمون کے انجکشن لگائے گئے جس سے ان میں پی سی اوز کی علامتیں ظاہر ہوگئیں۔

پی سی اوز سے ظاہرہونے والی عام علامتوں میں بلوغت میں تاخیر، اووری سے متعلق مسائل، تولیدی صلاحیتوں میں تاخیر اور دیگر شامل ہیں۔

ہارمونزمیں زیادتی دماغی خلیوں کو متحرک کر دیتی ہے جس سے ٹیسٹرون کی سطح میں اضافہ ہوجاتا ہے۔ سائنسدانوں نےاس پرقابو پانے کے لیے چوہوں کو ایک آئی وی ویف انجکشن سیٹروریلکس لگایا جو خواتین کے ہارمونز کو کنٹرول کرتا ہے۔ اس سے چوہوں میں پی سی اوز کی علامتیں ختم ہوگئیں۔

 
 
 

ضرور دیکھئے