کالا پتھریا آسان موت؟ پنجاب میں فروخت پرپابندی عائد

Samaa Web Desk
April 10, 2018

رپورٹر: اخترعلی

ڈیرہ غازی خان: جنوبی پنجاب میں کالاپتھر سے ہونے والی اموات کے بعد حکومت کو خودکشی کے ہتھیارپرپابندی کا خیال آہی گیا۔ کالا پتھر کی فروخت اور استمعال پر دفعہ 144 نافذ کردی گئی۔

کالاپتھر،خودکشی کا آسان ہتھیاربن گیا۔ ڈیرہ غازی خان میں اوسطا ہر روز تین افراد یہ زہر پی رہے ہیں جس کےبعد میڈیا کی نشاندہی پرپنجاب حکومت نے کالاپتھر کی فروخت اور استمعال پر پابندی عائد کردی۔

ڈپٹی کمشنر ڈی جی خان محمد ابراہیم جنید کا کہنا ہے کہ معاملے کی سنگینی کودیکھتے ہوئے ہم نے حکومت پنجاب اور ہوم ڈپارٹمنٹ کسے کالا پتھر کی فروخت پر پابندی عائد کرنے کی درخواست کی تھی جس کے بعددفعہ 144 نافذ کردی گئی ہے۔

بال رنگنے کے لیے استمعال ہونے والا یہ پتھرصرف دس روپے میں دستیاب ہے اور زہریلی خصوصیات کی بنا پتپندرہ ماہ میں ساٹھ افراد کی زندگیاں چاٹ چکا ہے جس میں سے زیادہ تعداد خواتین کی ہے۔

اس حوالے سے اموات کے اعداد وشمار بتاتے ہوئے سرکاری اسپتال کے آئی سی یو انچارج ڈاکٹرابرار کھوسہ نے کہا کہ ہمارے پاس بڑی کو تعداد میں کالا پتھر سے متاثرہ افراد کو لایا جا رہا ہے۔ گزشتہ سال 156 مریضوں کو لایا گیا تھا جن میں سے 52 کی موت واقع ہوگئی جبکہ رواں سال کے پہلے 3 ماہ کے دوران 27 مریض آئے جن میں سے 6 جانبر نہ ہوسکے۔

ڈاکٹرزکا یہ بھی کہنا ہےکہ لوگ قانونی کارروائی سے بچنےکےلیےمریض کواسپتال لےکرہی نہیں آتے۔