دنیا میں ایک تہائی آبادی موٹاپے کا شکار

March 19, 2017

1340038800000

اسلام آباد : ماہرین کا کہنا ہے کہ سال2030 ءتک دنیا کی ایک تہائی آبادی بسیار خوری کے باعث موٹاپے کا شکار ہو جائے گی۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق سال 2030 ءتک دنیا کی ایک تہائی آبادی بسیار خوری کے باعث موٹاپے کا شکار ہو جائے گی۔

FILE- In this file photo dated Wednesday, Oct. 17, 2007, an overweight person eats in London, Wednesday, Oct. 17, 2007.  Almost a third of the world population is now fat, and no country has been able to curb obesity rates in the last three decades, according to a new global analysis released Thursday May 29, 2014,  led by Christopher Murray of the Institute for Health Metrics and Evaluation at the University of Washington, USA, and paid for by the Bill & Melinda Gates Foundation.  Researchers reviewed more than 1,700 studies covering 188 countries covering over three decades and found more than 2 billion people worldwide classified as overweight or obese. The highest rates of obesity were found in the Middle East and North Africa, with the U.S. having about 13 percent of the world’s fat population. (AP Photo/Kirsty Wigglesworth, FILE)

اقوام متحدہ کی غذا کی عالمی تنظیم کی رپورٹ کے مطابق ناقص غذا کی وجہ سے ہر تین میں سے ایک شخص کی صحت کو خطرات لاحق ہیں۔ غریب ممالک میں پچیس فیصد بچوں کو ناکافی یا ناقص خوراک کے مسائل کا سامنا ہے۔

535550-obesity-getty-images

رپورٹ کے مطابق دنیا کی دو ارب آبادی کو جسم کےلئے ضروری وٹامن اور معدنیات کی قلت کا سامنا ہے جس کی وجہ سے دل، بلڈ پریشر، شوگر سمیت دیگر مختلف امراض پیدا ہو رہے ہیں۔

trans-fat_f4a05126-d31e-11e6-89f5-e9c163347fb8

رپورٹ کے مطابق غذائی قلت ، بھوک اور اس سے جڑے امراض کی وجہ سے عالمی معیشت کو شدید مشکلات کا سامنا ہے اور صرف افریقہ اور ایشیاءمیں مجموعی قومی پیداوار کو تین سے 16 فیصد کے خسارے کا سامنا ہے۔ سماء

Email This Post
 
 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.