Wednesday, January 19, 2022  | 15 Jamadilakhir, 1443

علی ظفر کیخلاف مہم، میشا شفیع کے وارنٹ گرفتاری جاری

SAMAA | - Posted: Jan 13, 2022 | Last Updated: 6 days ago
SAMAA |
Posted: Jan 13, 2022 | Last Updated: 6 days ago

لاہور کی مقامی عدالت نے اداکار علی ظفر کے خلاف سوشل میڈیا پر مہم چلانے کے مقدمے میں پیش نہ ہونے پر ‏میشا شفیع کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری کردیے۔ ‏
‏ ‏
گلوکار علی ظفر کی جانب سے دائر ہتک عزت کے مقدمہ کی سماعت کے دوران گلوکارہ میشا شفیع نےعدالت کے روبرو ایک روز کيلئے حاضری معافی کی درخواست دی جسے عدالت نے مسترد کردیا اور گلوکارہ میشا شفیع کے ورانٹ گرفتاری جاری کردیئے۔

سماعت کے دوران اداکارہ عفت عمر اور ‏علینا غنی سمیت دیگر ملزمان نے پیش ہو کرحاضری لگوائی تاہم عدالت نے آئندہ سماعت پر میشا شفیع کو طلب کرتے ہوئے کارروائی 8 فروری تک ملتوی کردی۔

اس سے قبل 4 جنوری 2022 کو ‏ میشا شفیع کے خلاف ہتک عزت دعوی پر سماعت کے دوران گلوکار علی ظفر کے وکلا نے میشا شفیع کے بیان پر 5 گھنٹے کی طویل جرح کی، جرح کرتے ‏ہوئے وکیل نے پوچھا کہ جیمنگ سیشن کے وقت روم میں کتنے لوگ تھے، میشا شفیع نے کہا کمرے میں 10سے 15 لوگ تھے۔

وکیل علی ظفر نے کہا کہ اس واقعہ کا کوئی چشم دید گواہ نہیں ہے، میشا شفیع نے جواب ‏دیاجی ہاں اسکا ‏کوئی چشم دید گواہ نہیں ہے حتی کہ میں بھی اس واقعہ کی چشم دید گواہ نہیں ‏ہوں میں نے بھی اسے محسوس ‏کیا۔

علی ظفر سے صلح کی خبریں بے بنیاد ہیں،میشا شفیع

علی ظفر کے وکیل نے کہا کہ آپ نے جیمنگ سیشن کی تعریف میں میسج کیا جس پر میشا ‏شفیع نے کہا کہ ‏علی ظفر نے میری تعریف کی تھی جس پر مروت میں میں نے میسج کیا، میشا ‏شفیع کی علی ظفر سے واٹس ‏ایپ پر کی گئی بات کا پرنٹ عدالت میں پیش کر دیا۔

واضح رہے کہ اپریل 2018 میں میشا شفیع نے ٹوئٹر پرعلی ظفرکیخلاف الزام عائد کیا تھا کہ وہ انہیں ایک سے زیادہ مواقع پرجسمانی طورپرہراساں کرچکے ہیں۔

جواب میں علی ظفرنے میشا کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ دائرکرتے ہوئے موقف اختیارکیا تھا کہ میشا نے 19 اپریل 2018 کو اپنا ٹوئٹر اکاونٹ میرے خلاف تحقیرآمیزجملے اورجھوٹے الزامات پوسٹ کرنے کے لئے استعمال کیا۔

گلوکارنے الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ ملزمان دفاع کے کئی مواقع دينے کے باوجود تسلی بخش جواب نہيں دے سکے، جنسی ہراسانی کے الزام سے ہفتوں قبل کئی جعلی اکاؤنٹس کی جانب سے میرے خلاف مذموم مہم کا آغازکیا گیا، میری ساکھ کو پہنچنے والے نقصان اورجھوٹے الزامات عائد کرنے پرمیشا شفیع ایک ارب روپے ہرجانہ ادا کریں۔

اس کیس میں پہلی بار دسمبر2019 میں پیش ہو کر بیان ریکارڈ کروانے والی میشا شفیع 16 دسمبر 2020کو 2 سال بعد اپنے خلاف ہتک عزت کے کیس میں پہلی بار پیش ہوئیں تھیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube