Monday, January 17, 2022  | 13 Jamadilakhir, 1443

ملالہ کی ٹویٹ پردیامرزا پُرجوش ہوگئیں

SAMAA | - Posted: Nov 27, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Posted: Nov 27, 2021 | Last Updated: 2 months ago

ملالہ یوسفزئی کی آکسفورڈ یونیورسٹی سے گریجویشن کی تقریب کی تصاویر وائرل ہونے کے بعد اُن کیلئے دنیا بھرسے مبارکباد کا سلسلہ جاری ہے۔

نوبل انعام یافتہ ملالہ اس سال کئی وجوہات کی بنا پرخبروں میں رہیں، سب سے پہلے ووگ کے سرورق پران کی خاصی گلیمرس تصاویروائرل ہوئیں اور پھراسی میگزین کو دیے جانے والے انٹرویومیں شادی سے متعلق ملالہ کے خیالات نے سوشل میڈیا پرخاص ہنگامہ برپا کیے رکھا۔

ابتداء میں شادی پریقین نہ رکھنے والی ملالہ نے اس انٹرویو کے 6 ماہ بعد ہی اچانک پی سی بی عہدیدارعصر ملک کے ساتھ شادی کا اعلان کرکے بھی سب کو حیرت سے دوچارکیا۔

ملالہ کا نام ایک بار پھرزیرگردش ہونے کی تازہ ترین وجہ آکسفورڈ یونیورسٹی سے گریجویشن کی ڈگری لینا ہے، 24 سالہ گل مکئی کی ٹائم لائن مبارکباد اور نیک خواہشات سے بھرپورہے۔

ملالہ کے مداحوں نے سوات میں چائلڈ ایکٹوسٹ ہونے سے لے کر آکسفورڈ گریجویٹ بننے تک کے اس سفر کو ‘متاثر کن’ قرار دیا ہے۔ مبارکباد دینے والوں میں بالی ووڈ اسٹار دیا مرزا بھی شامل ہیں جنہوں نے ملالہ کی ٹویٹ کو ری ٹویٹ کرتے ہوئے اپنی بھرپورخوشی کااظہارکیا۔

اگست 2017 میں آکسفورڈ میں داخلہ لینے والی ملالہ نے فلسلفہ، سیاست اور معاشیات کے مضامین میں ڈگری لی،یہی مضامین آکسفورڈ سے بینظیر بھٹو اور عمران خان نے بھی پڑھے تھے۔

ملالہ اپنی گریجویشن مکمل کرچکی ہیں تاہم باقاعدہ تقریب کا انعقاد اب ہوا ہے۔ گزشتہ سال گریجویشن کے بعد ملالہ نے اپنی ٹویٹ میں خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ ‘ خوشی اور شکریہ کا اظہار کرنا مشکل ہو رہا ہے میں نہیں جانتی کہ آگے کیا ہوگا۔ فی الحال نیٹ فلکس، مطالعہ اور نیند ہو گی’۔

اس اہم موقع پر ملالہ کے والد اور شوہر کی جانب سے بھی ٹویٹس سامنے آئیں۔

عصر اور ملالہ کی پہلی ملاقات جون 2018 میں آکسفورڈ یونیورسٹی میں ہوئی جہاں وہ دوستوں سے ملاقات کیلئے آئے تھے۔ اسی حوالے سے عصر نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ ملالہ کے گریجویشن ڈے پر وہ جگہ جہاں ہم پہلی بار ملے تھے، کچھ زیادہ خاص محسوس ہوئی۔

پاکستان کے علاقے سوات سے تعلق رکھنے والی ملالہ امن کے نوبل انعام،سخاروف اورورلڈ چلڈرن پرائز سمیت 40 سے زائد اعزازات احاصل کرچکی ہیں۔

مجھے فخر ہے، ملالہ کیلئے پریانکا کی پوسٹ

ملالہ یوسفزئی کو اس وقت عالمی پہچان ملی جب 2012 میں سوات میں اسکول سے واپس آتے ہوئے ان پر فائرنگ کی گئی ۔ ملالہ کو لڑکیوں کی تعلیم کے لیے آواز اٹھانے پر نشانہ بنایا گیا تھا۔ بعد میں بہترعلاج معالجے کیلئے برطانیہ منتقل کردیا گیا تھا جہاں کافی عرصے ان کا علاج جاری رہا۔ صحت یاب ہونے کے بعد ملالہ نے برطانیہ میں ہی اپنے تعلیمی سلسلے کو دوبارہ استوار کیا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube