Monday, December 6, 2021  | 30 Rabiulakhir, 1443

عامرخان کےاشتہارپربھارتی انتہاپسندمسلم دشمنی نکالنےلگے

SAMAA | - Posted: Oct 23, 2021 | Last Updated: 1 month ago
Posted: Oct 23, 2021 | Last Updated: 1 month ago

جس حساب سے بھارت میں فیشن شوٹس اور ٹی وی اشتہارات کو زندگی موت کا مسئلہ بنایا جارہا ہے، لگتا ہے وہ دن دور نہِں جب بے جی پی سرکار بھارت کی پوری شوبزانڈسٹری اپنی تحویل میں لے لے گی تا کہ نو من تیل ہو، نہ رادھا ناچے۔

کپڑوں کےاشتہارات سے لیکر ڈی سی کامکس کی اینیمیٹڈ فلم پراعتراض اٹھانے والے بھارتیوں کا تازہ ترین مسئلہ گاڑیوں کے ٹائربنانے والی ایک کمپنی کا اشتہارہے اوروجہ اس باربھی مذہبی جذبات مجروح ہونا ہی ہے۔

اس اشتہارمیں بالی ووڈ کے مسٹرپرفیکشنسٹ عامرخان نے کام کیا ہے جو انتہائی کم اورسوچ سمجھ کر کام کرنے کیلئے مشہورہیں۔

اشتہارمیں ٹی 20 ورلڈ کپ کی مناسبت سے دکھایا گیا ہے کہ بھارتی ٹیم کے میچ کے حوالے سے عامرخان پرجوش لڑکوں سے کہہ رہے ہیں کہ آج اگر ہماری ٹیم چھکے چھڑاتی ہے تو ہم بھی پٹاخے چھڑائیں گے لیکن سوسائٹی کے اندر روڈ پرنہیں۔ کیونکہ روڈ گاڑی چلانے کیلئے ہے، پٹاخے جلانے کیلئے نہیں۔

بھارت میں ایک اور اشتہار مذہبی جذبات کی نذر

بنیادی طورپراشتہارکا مقصد انتہائی سادہ ہے لیکن روڈ پر پٹاخے جلانے سے روکے جانے پرانتہا پسندوں حسب عادت اعتراض کیلئے مذہبی پہلو نکال لیا اور کہا کہ ایسا دیوالی کی خوشیاں منانے سے روکنے کیلئے کیا گیا۔

اس اشتہار کے ذریعے عامر خان نے لوگوں کو پیغام دیا ہے کہ روڈ پر پٹاخے جلانے کے دوران سڑکیں بلاک ہوجاتی ہیں جس سے لوگوں کو پریشانی ہوتی ہے۔ لیکن حسب توقع انتہا پسند ہندوؤں کو عامر خان کا یہ پیغام ایک آنکھ نہیں بھایا اور انہوں نے اسے مذہبی رنگ دے دیا۔

سوشل میڈیا پر صارفین کی جانب سے ٹائربنانے والی کمپنی کو تنقید کا نشانہ بنانے کے علاوہ بی جے پی کرناٹکا کے وزیراننتھ کمار نےعامرخان کو نشانے پر رکھ کر کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسراورمینجر کوخط لکھ کر شدید تحفظات کا اظہارکرتے ہوئے بھارت میں ہونے والے نمازجمعہ کے اجتماعات اور اذان کو مسئلہ بنادیا۔

بی جے پی وزیر کا کہنا ہے کہ عامر خان نے اشتہار میں روڈ پر پٹاخے نہ جلانے کا پیغام دیا ہے تاہم میں آپ کی توجہ ایک اور مسئلے کی جانب مبذول کروانا چاہتاہوں، مسلمانوں کی جانب سے نمازکے نام پر روڈ کو بلاک کرنے سے بھی لوگ سڑکوں پر پریشانی کا شکار ہوتے ہیں۔

سپرمین کی مقبوضہ کشمیردکھانے پربھارتی مشتعل

یہی نہیں ، اننتھ کمارنے اذان کو بھی پریشان کن کہتے ہوئے بالی ووڈ ہیروز کا نام لیے بغیر کہا کہ اینٹی ہندو ہیروز کا ایک گروہ ہمیشہ ہندوؤں کے جذبات مجروح کرتا ہے اور اپنی کمیونٹی کے بارے میں بات نہیں کرتا۔

بھارتیوں نے ٹویٹس میں بھی اس اشتہارکو مسئلہ بناتے ہوئےاپنی مسلم دشمنی نکالی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube