Wednesday, December 8, 2021  | 3 Jamadilawal, 1443

‘بیڈروم سین نہ پیارمحبت’

SAMAA | - Posted: Oct 23, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Posted: Oct 23, 2021 | Last Updated: 2 months ago

پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) نے ڈراموں میں گلے لگانے سمیت دیگرغیراخلاقی مناظر شیئرکرنے سے کے حوالے سے انتباہ جاری کیا ہے۔

پیمرا نے تمام سیٹلائٹ چینلزکو نوٹیفکیشن جاری کرتے ہوئے کہا ہےکہ، ‘پاکستانی ڈرامہ انڈسٹری کے مروجہ رجحانات پر پیمرا کو نہ صرف پاکستان سٹیزن پورٹل (پی سی پی) بلکہ میڈیا/ واٹس ایپ گروپس پر بھی عوام کی متعدد شکایات موصول ہو رہی ہیں۔

ریگولیٹری اتھارٹی نے کسی مخصوص ڈرامے یا پروگرام کا نام لیے بغیروقتا فوقتا جاری کی جانے والی سابقہ ہدایات کے تسلسل میں کہا کہ سیٹلائٹ ٹی وی چینلز قابل اعتراض ڈرامے /مواد نشر کررہے جوغیر مناسب لباس ، لاڈ دکھانا، بستر کے مناظر اور متنازع وغیرضروری تفصیلات پرمبنی ہیں اور اسلامی معاشرے و پاکستانی ثقافت سے مطابقت نہیں رکھتیں۔

پیمرا کے مطابق یہ ناظرین کے لیے انتہائی پریشان کن اور شائستگی کےمعیارکے خلاف ہیں۔چینلزکو باربارہدایت کی گئی ہے کہ وہ غیرمہذب لباس ، متنازع اور قابل اعتراض پلاٹ والے مواد کا جائزہ لیں ۔

ماہ ستمبرمیں پیمرا کال سینٹرکو موصول ہونے والی شکایات کا جائزہ لیا جائے تو ہم ٹیلی ویژن پرنشرکیے جانے والے ڈرامہ سیریل ‘ جدا ہوئے کچھ اس طرح’ میں مبینہ رضاعی بہن بھائی کی شادی دکھانے پرناظرین نے شدید اعتراض کرتے ہوئے متعدد شکایات درج کروائیں۔

نئے رائٹرخلیل الرحمان کے لکھےاس ڈرامے کو مومنہ دورید نے پروڈیوس کیا ہے جس کی کافی اقساط آن ائرجانے کے بعد یہ ڈرامہ ایک دم سے اگلی قسط کے ٹیزر کے باعث موضوع بحث بنا۔ ٹیزر میں ٹوئسٹ کے ساتھ دودھ شریک بہن بھائی کی شادی اور پھرلڑکی کوامید سے دکھایا گیا جس پر سوشل میڈیا پرشدید احتجاج دیکھنے میں آیا۔ تاہم کہانی میں اصل حقیقت کچھ اورتھی ۔

ستمبرمیں ہی موبائل کمپنی ٹیلی نار کے ایک اشتہارمیں استعمال کیے جانے والے نامناسب الفاظ پربھی پیمرا کو بہت سی شکایات موصول ہوئیں۔

گو اس اشتہارمیں موبائل کمپنی کے پیکجز کی تشہیر کیلئے میاں بیوی کا رشتہ دکھایا گیا ہے تاہم ناظرین نے مواد کو بولڈ اور نامناسب کہا۔

پیمرا کی جانب سے عوامی شکایات پر اب تک کا آخری نوٹس یکم اکتوبر2021 کوجگن کاظم کے 24 ستمبر کو نشر کیے جانے والے مارننگ شو ‘مارننگ ود جُگن’ کیلئے جاری کیا گیا تھا۔ ٹوئٹرپراس شو کا ایک کلپ وائرل ہونے کے بعد ‘بائیکاٹ مارننگ ود جگن کاظم ‘ ٹوئٹر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا تھا۔

مارننگ شومیں سیب: جگن کاظم شو بند کریں

وائرل ویڈیوکلپ میں ہرٹیم سے مرد حضرات کو سیب کھانے کیلئے کہا جاتا ہے جن کے ہاتھ ان کی پشت پربندھے ہیں۔ بغیرچھوئے ادھرسے ادھر جھولتے ان سیبوں کوکھانے کے مشن امپاسبل کو ‘ پاسبل ‘ بنانے والی جگن نے خواتین ساتھیوں کو بُلا کر مدد کا آئیڈیا دیا لیکن سیب کو ہاتھ لگانے کی اجازت انہیں بھی نہیں تھی۔ اس مشکل کا حل یوں نکالا گیا کہ خواتین نے یہاں وہاں لٹکتے سیبوں کواپنے ماتھے کا سہارا دیا اورساتھیوں نے سیب کھانے کا آغازکیا۔

یہ انوکھا طریقہ دیکھنے والوں کیلئے خاصا معیوب تھا، اسی وجہ سے مشتعل سوشل میڈیا صارفین نے الزام عائد کیا کہ جگن کاظم فحاشی کو فروغ دے رہی ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube