Tuesday, October 20, 2020  | 2 Rabiulawal, 1442
ہوم   > اینٹرٹینمنٹ

وقارذکاءمروہ کےوالدین سےمتعلق ندایاسرکا جھوٹ سامنےلےآئے

SAMAA | - Posted: Sep 19, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Sep 19, 2020 | Last Updated: 1 month ago

ٹی وی ہوسٹ اور سوشل میڈیا ایکٹوسٹ وقار ذکاء نے کراچی میں ریپ کے بعد قتل ہونے والی 5 سالہ بچی مروہ کے والدین کو مارننگ شو میں مدعو کرنے سے متعلق میزبان ندا یاسرکے بیان کو جھوٹ قراردیا ہے۔

بچی کے والدین کو شو میں مدعو کرنے اورحساس نوعیت کے سوالات کرنے پرسوشل میڈیا پر ندا یاسرکو تنقید کانشانہ بناتے ہوئے پیمرا میں شکایت درج کران کے علاوہ اورمارننگ شو پر بھی پابندی لگانے کا مطالبہ کیاجارہا تھا جس کے بعد ندا یاسر نے اپنے بیان میں معافی مانگتے ہوئے کہا تھا کہ اس شو کیلئے بچی کے والدین نے اُن سے خود رابطہ کیا تھا۔

اسی حوالے سے انسٹا پر ویڈیو شیئر کرتے ہوئے وقار ذکاء نے کہا کہ ندا یاسر نے معافی مانگتے ہوئے جھوٹ بولے جو بےنقاب کرنے پر ہوسکتا ہے کہ میڈیا کے کچھ لوگ مجھ پر مستقل طور پر پابندی عائدکردیں۔ لیکن میں ان میں سے نہیں ہوں جنہیں یہ خوف لاحق ہو کہ مجھے اے آر وائی پر بلایا نہیں جائے گا یا میرے خلاف مہم چلائی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ ندا یاسرحساس معاملات پربڑی غلطیاں کررہی ہیں۔ بچی کی فیملی کی جانب سے خود رابطہ کرنے کے بیان پر ندا یاسر پرتنقیدکرتے ہوئے وقار ذکاء نے کہا کہ آپ اتنا جھوٹ کیوں بول رہی ہیں۔

View this post on Instagram

Nida Yasir Lied in her Apology Exposed

A post shared by Waqar Zaka (@waqarzaka) on Sep 17, 2020 at 11:57am PDT

وقار ذکاء نے ویڈیو میں مروہ کے والد کی سوشل میڈیا ایکٹوسٹ نبیل سے کی جانے والی بات چیت بھی دکھائی جس میں وہ ندا یاسر کے بیان کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے شو کی میزبان اور نہ ہی انتظامیہ سے رابطہ کیا بلکہ انہوں نے خود ہمیں کال کرکے شو میں بلایا تھا۔

بچی کے تایا نے بھی کہا کہ ہم کسی میڈیا والے کو نہیں جانتے تھے لیکن مروہ کی باڈی ملنے کے بعد انہوں نے خود ہم سے رابطہ کیا تھا۔

وقار ذکاء نے ندا یاسر کے اس بیان کو بھی غلط قرار دیا جس میں و ہ کہہ رہی ہیں کہ شو پورادیکھیں تو اندازہ ہوگا کہ پہلے دن ایف آئی آر بھی نہیں کاٹی جارہی تھی لیکن جب انہوں نے احتجاج کیا تو دوسرے روز انہوں نے ایف آئی آردرج کی گئی۔ ان کی فیملی کی درخواست کے بعد مجھے لگا کہ سارے کام چھوڑ کر مجھے ان کو سپورٹ کرنا ہے۔

ویڈیو بیان میں بچی کے تایا کا کہنا ہے کہ ایف آئی آر اسی روز 4 ستمبر کو درج کرلی گئی تھی۔

وقار ذکاء نے ندا یاسر کو اخلاقی طورپرکیمرے کے سامنے نہ آنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ آپ کو اب پروڈیوسربن جانا چاہیے۔

View this post on Instagram

A post shared by Nida Yasir (@itsnidayasir.official) on Sep 17, 2020 at 2:38am PDT

واضح رہے کہ معافی مانگتے ہوئے اپنے بیان میں ندا یاسر کا کہنا تھا کہ بچی کی فیملی کی ریکوئسٹ کے بعد مجھے ایسا لگا کہ سارے پروگرام چھوڑ کے مجھے انہیں سپورٹ کرنا ہے اورخدا گواہ ہے کہ یہ کسی ٹی آر پی کے لیے نہیں کیا۔ ہماری ریٹنگ نگامے والے شوز سے آتی ہے ، ایسے شوز تو مجھے خود بہت پریشان کردیتے ہیں۔میں نے اپنا فرض سمجھ کر انہیں شو میں بلایا اور یقین کیجیے اس شو کے 2 دن بعد بچی کے ساتھ ریپ کرنے والا مجرم گرفتار ہوا، اس خاندان نے مجھے بہت دعائیں دیں، ہمارے پروگرام کی وجہ سے لوگوں نے اس خاندان کی مالی مدد کی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube