Monday, October 26, 2020  | 8 Rabiulawal, 1442
ہوم   > اینٹرٹینمنٹ

چلتےپھرتےاسکول ہیں آپ: اقراءعزیز،نعمان اعجازکی مداح ہوگئیں

SAMAA | - Posted: Sep 17, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Sep 17, 2020 | Last Updated: 1 month ago

تصویر: انسٹاگرام

اقراء عزیز نے حال ہی میں تنقید کی زد میں آنے والے سینیئراداکارنعمان اعجازکو چلتا پھرتا اسکول قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ میں نے آپ سے بہت کچھ سیکھا۔

اداکارہ نےانسٹاگرام پرنعمان اعجاز کے ساتھ تصویرشیئرکی جس میں اقراء کالج یونیفارم میں ملبوس ہیں اور دونوں اپنے نئے آنے والے ڈرامے “رقیب سے” کے سیٹ پرموجود ہیں۔

نعمان اعجازکی صلاحیتوں کو سراہنے والی اقراء نے کیپشن میں لکھا ” سر، میں خوش قمست ہوں کہ آپ کے ساتھ کام کرنے کا موقع ملا، میں نے آپ سے بہت کچھ سیکھا اور آپ کے طنز ومزاح سے لطف اندوز ہوئی، آپ ایک لیجنڈہیں جو پچھلے 32 سال سے ہمیں تفریح فراہم کررہے ہیں اور  آپ میں غرور نہیں” ۔

اقراء نے مزید بتایا کہ انہیں اس سے قبل اتنی خوشی کبھی نہیں ہوئی۔ ڈرامے کے حوالے سے تمام ترخوشگوار یادوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اقراء نے مزید لکھا” چلتے پھرتے اسکول ہیں آپ”۔

ڈرامہ” رقیب سے” ایوارڈ یافتہ ڈرامہ نگار بی گل نے تحریر کیا ہے جس کے ہدایتکار کاشف نثارہیں۔ اقراء اور نعمان اعجاز کے علاوہ فریال محمود ، حدیقہ کیانی اورثانیہ سعید بھی کاسٹ کا حصہ ہیں۔ حدیقہ کیانی اس ڈرامے سے ایکٹنگ ڈیبیو کررہی ہیں۔

نعمان اعجازکوحال ہی میں ایک پرانا انٹرویو کلپ وائرل ہونے کے بعد سوشل میڈیا پرشدید تنقیدکاسامنا کرنا پڑاتھا۔

یہ انٹرویوایک سال قبل اگست 2019 میں نشرہواتھا جس کا ایک مختصرکلپ حال ہی میں وائرل ہوا۔ نعمان اعجاز ایک سوال کے جواب اپنی اہلیہ کی تعریف کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ وہ خوبصورت خواتین کے عشق میں مبتلا ہوجاتے ہیں اور اتنے اچھے اداکار ہیں کہ اہلیہ کوعلم ہی نہیں ہونے دیتے۔ جس کے بعد میزبان عفت عمر خوشگوارموڈ میں ان سے ایسی کامیاب زندگی گزارنے کے گُرمانگتی ہیں۔ ہنستے ہوئے اس موضوع پربات کرنے والے نعمان اعجاز بعد ازاں “می ٹو” مہم کے حوالے سے کہتے ہیں کہ یہ می ٹو، ہی ٹو، شی ٹو سب دین سے دوری کی وجہ سے ہورہا ہے۔

نعمان اعجاز پرتنقید کے بعد عتیقہ اوڈھوبول پڑیں

اس انٹرویو کے بعد سوشل میڈیا پر نعمان اعجاز کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ان کے طرزعمل کو دوغلا قرار دیا گیا۔

یڈیو کلپ وائرل ہونے کے بعد برطانوی نشریاتی ادارے سے بات کرتے ہوئے نعمان اعجاز کا کہنا تھا کہ وہ اس معاملے کو بڑھاوا نہیں دینا چاہتے۔ لوگوں کو گالیاں دینے دیں اور اپنے ذہنوں کو گندا کرنے اور کڑھنے دیں۔ یہ پاکستانیوں کی عادت ہے، ان کو اپنی زندگیوں میں کوئی دلچسپی نہیں ہے اور کوئی اپنے گریبان میں نہیں جھانک رہا، بس دوسرے پر انگلی اٹھانے کی عادت ہے۔ میں جانتا ہوں اور میرا رب جانتا ہے، مجھے کسی انسان کو وضاحت دینے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube