Friday, March 5, 2021  | 20 Rajab, 1442
ہوم   > اینٹرٹینمنٹ

اداکارشان نے ترک ڈرامے کی مخالفت کردی

SAMAA | - Posted: May 2, 2020 | Last Updated: 10 months ago
SAMAA |
Posted: May 2, 2020 | Last Updated: 10 months ago

پاکستان ٹیلی ویژن وزیراعظم عمران خان کی خواہش پریکم رمضان سے ترکی کا “گیم آف تھرونز” کہلایا جانے والاڈرامہ “دیریلیش، ارطغرل” دکھارہا ہے جسے عام ناظرین میں بیحد پزیرائی حاصل ہو رہی ہے مگر لالی ووڈ کے باصلاحیت ہیرو شان شاہد اس تمام صورتحال سے خوش نہیں۔

ڈرامے کی کہانی 13 ویں صدی میں سلطنت عثمانیہ کےقیام سے قبل کی ہےجس میں اسلامی فتوحات کا سلسلہ دکھایا گیا ہے۔

شان نےسماجی رابطوں کی سائٹ ٹوئٹرپرپی ٹی آئی رہنما اور وفاقی وزیرفیصل جاوید کی ٹویٹ کاجواب دیا جس میں انہوں نے ارطغرل کو یوٹیوب پردیکھنے کے خواہشمند ناظرین کیلئے لنک شیئر کیا تھا۔

سرکاری ٹی وی پر بیرونی مواد نشرکیے جانے کی مخالفت کرتے ہوئے شان نے لکھا ” ہمیں اپنی تاریخ اور اس کے ہیروز کو تلاش کرنا چاہیے”۔

شان کی اس خواہش کے اظہار کے بعد بیشترسوشل میڈیاصارفین نے اداکار کو تنقید کا نشانہ بنانا شروع کردیا۔ اداکارنے تحفظات ظاہر کرنے والے کئی صارفین کے تبصروں کو ری ٹویٹ کرتے ہوئے اپنی رائے بتائی۔

ایک صارف نے لکھا کہ تاریخ کو مغل سلطنت کی عیاشیوں سے بھراقراردیتے ہوئے کہا کہ آزادی کی جدوجہد پر پاکستان میں کافی کچھ بنایا جاچکا ہے،ہمیں اس وقت نوجوان نسل کو اسلام کے ہیروز سے متعارف کروانا ہے ، خواہ ان کا تعلق کسی بھی ملک سے ہو۔

جواب میں شان نے لکھا ” بہت اچھی بات ہے مگرہم کب تک مانگے ہوئے لفظوں سے اپنی خودی کی دیوارمضبوط کریں گے، پی ٹی وی کو ایسے ڈرامے خود پروڈیوس کرنے چاہئیں۔ فنڈنگ کہاں جاتی ہے؟ کوئی تماشہ نہیں ہوتا پھربھی پیسہ ہضم ہوجاتا ہے”۔

ایک اور صارف نے لکھا کہ ارطغرل ہمارا ہیرو ہے، آپ زبان کی بنیاد پرتقسیم نہ ڈالیں۔ جس پرشان نے لکھا “پھر ہم سب عربی کیوں نہیں بولتے؟ “۔

صارفین نے اپنے تبصروں میں شان کو بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اگرپاکستان میں ایسے پراجیکٹس بن سکتے ہیں توآپ کو کس نے روکا ہے؟ بجائے تنقید کے آپ کوئی اسپانسرڈھونڈتے اوربنا لیتے۔

جس پر اداکارنے وضاحت کرتے ہوئے طنزبھی کرڈالا ، ” میرے خیال میں تو کافی کچھ بن سکتا ہے مگرحقیقت میں اتنا بڑا پراجیکٹ حکومت کی دلچسپی کے بغیر نہیں ہوسکتا، میرے خیال میں تو چاند پر پاکستانی پرچم ہونا چاہیے ، کیا راکٹ خود بنالوں؟ “۔

ایک صارف نے لکھا” آپ انڈسٹری کے اہم فرد ہیں جس کی جیبیں بھری ہوئی اور انٹرٹینمنٹ انڈسٹری میں بیشمار رابطے ہیں، آپ ابتدا کرتے ہوئے ہماری اپنی تاریخ سے کچھ ایسا کیوں نہیں بناتے جو دوسروں کی کوالٹی پروڈکشنزکا مقابلہ کرسکے۔

جواب میں شان نے لکھا ” ہم میں سے ہرایک کو اہنا کردار ادا کرنا چاہیے، میری جیبیں بھری ہوئی ہیں لیکن مشکل وقت میں میرے لیے کافی ہوں گی کیونکہ میں نہیں چاہوں گا کہ میرے بل آپ بھریں لیکن میں اپنے ٹیکسز ادا کرتا ہوں تو اس کا استعمال کیوں نہ ہو”۔

ارطغرل کو پاکستان میں دکھائے جانے سے قبل مخلتف زبانوں میں ڈبنگ کے بعد دنیا کے 60 ممالک میں دکھایا جاچکا ہے۔ اس کے 5 سیزن ہیں۔ ڈرامے کی اہمیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ ترک صدر رجب طیب اردوان نے خود سیٹ پر جا کر اس میں کام کرنے والے اداکاروں سے ملاقات کی اور سیلفی بنوائی۔

عمران خان کی جانب سے ارطغرل کو پاکستان میں آن ائر کرنے کا فیصلہ ترکی اور ملائشیا کے سربراہان مملک سے ملاقات کے بعد کیا گیا تھا، جس میں تینوں سربراہان کی جانب سے مل کر ایک ٹی وی چینل بنانے کا بھی اعلان کیا گیاتھا۔

ارطغرل نیٹ فلیکس پرترکش زبان میں انگریزی سب ٹائٹلزسمیت کئی آن لائن اسٹریمنگ چینلز پرموجود ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube