ہوم   > اینٹرٹینمنٹ

برابری کرنی ہےتو خواتین مردوں کاگینگ ریپ کریں،خلیل الرحمان

SAMAA | - Posted: Nov 1, 2019 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 1, 2019 | Last Updated: 4 months ago

خلیل الرحمان قمر پاکستان کی انٹرٹینمنٹ انڈسٹری کا ایک معروف ترین نام ہیں جن کے کریڈٹ پرمتعدد ہٹ ڈرامہ سیریلز ہیں۔ کاف کنگنا سے فلم ڈائریکشن کا آغاز کرنے والے خلیل الرحمان قمر نے حال ہی میں دیے جانے والے ایک انٹرویو میں صنفی مساوات کی بات کرتے ہوئے ایک نئی بحث چھیڑ دی۔

خلیل الرحمان قمر عورت کی برابری کے تصور کو انتہا پرلے گئے۔ انٹرویو میں بات ان لکھے گئے آن ائر ڈرامے ’’میرے پاس تم ہو ‘‘ سے شروع ہوئی جس میں عورت کو بیوفائی اور مرد کو وفا کو اجاگرکیاگیا ہے۔

مصنف کے مطابق یہ ڈرامہ لکھتے ہوئے میرے ہاتھ کانپے، آخری سین لکھتے ہوئے آنسو بہہ رہے تھے۔ یہ بہت سارے ،مردوں کی سچی کہانی ہے جن کا میں نے مشاہدہ کیا۔

اپنا مشاہدہ بتاتے ہوئے خلیل الرحمان قمر نے کہا کہ شادی شدہ عورت بیوفائی کرے تو آنکھیں نہیں جھکاتی بلکہ ڈٹ کر بات کرتی ہے کیونکہ اسے کسی دوسرے مرد کا بھروسہ ہوتا ہے۔غیر شادی شدہ لڑکی دھوکہ دے تو آنکھیں جھکا لیتی ہے۔ شادی شدہ مرد بھی دھوکہ دے تو آنکھیں جھکاتا ہے جبکہ غیر شادی شدہ مرد ایسا نہیں کرتا، وہ ڈٹ کردھوکہ دیتا ہے۔

کہانی کا دفاع کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ خواتین کو ڈرامے پرغصہ نہیں کرنا چاہیے۔ اگر عورت میں حیا اور وفا نہیں تو میری طرف سے عورت کو سات سلام ہے۔ میرے خلاف پرچہ کٹوا دیں یا می ٹو کا کیس کروا دیں، مجھے پرواہ نہیں لیکن میں ہرعورت کو عورت نہیں کہہ پاؤں گا۔

فلم کاف کنگنا ریلیز سے قبل سوشل میڈیا کا نشانہ بن گئی

 

خلیل الرحمان قمر نے دعویٰ کیا کہ وہ ’’اچھی عورت‘‘ کیلئے لڑ رہے ہیں اور پاکستان میں ان سے بڑا فیمنسٹ کوئی نہیں لیکن ساتھ ہی ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ’’ مرد اپنا سارا وقار ، ساری عزت و آبرو اور سرمایہ بیوی کی مٹھی میں رکھ کر اس کے لیے کام کرنے نکل جاتا ہے اور میں لعنت بھیجتا ہوں ان عورتوں پر جومرد کے پیچھے اس مٹھی کو کھول دیتی ہیں‘‘۔

صنفی مساوات کی بات کرتے ہوئے خلیل الرحمان قمر نے حقیقت سے دوری اختیار کرتے ہوئے ایک نیا فلسفہ بیان کرڈالا۔ ان کا کہنا تھا کہ عورتوں کی برابری کی بات کرنے والوں سے پوچھا کہ کیا انہوں نے 5 پانچ عورتوں کی جانب سے کسی شخص کو اغوا کرنے کی خبر سنی ہے؟ نہیں سنی تو جن عورتوں کو برابری چاہیے ، وہ بھی وہی کام کریں مرد کر رہے ہیں۔ بس لوٹیں، مرد کو اٹھا کر لے جائیں اور اس کا گینگ ریپ کریں ، پتہ تو چلے کہ برابری ہوتی کیا ہے۔ میں تواس بات سے پریشان ہوگیا ہوں ۔

انہوں نے کہا کہ مسئلہ یہ ہے کہ ہم مردوں نے چالاکی سے عورتوں کئے حقوق سلب کرلیے ہیں اور انہیں پتہ ہی نہیں کہ ان کے حقوق کیا ہیں۔ بجائے اس کے کہ عورتیں اپنے حقوق کا پتہ چلائیں ، وہ مردوں کے حقوق میں سے حصہ مانگ رہی ہیں جو انہیں کبھی نہیں ملے گا۔ برصغیر میں یہ اجازت نہیں دی جا سکتی کہ آپ شارٹس پہنیں۔ مجھے پتا ہے کہ ایک گروپ میرے خلاف نعرہ لگائے گا یا ٹویٹ کردے گا لیکن آپ مرد کی فطرت کو نہیں بدل سکتے ، ںیہ ناممکن ہے۔ ایسا کرنے سے معاشرہ دھڑام سے نیچے گرجائے گا۔ بےحیائی عورت کی تشریح نہیں کرتی ۔

عورت کی بربادی کا ذمہ دار عورت کو ہی ٹھہراتے ہوئےخلیل الرحمان قمر نے مزید کہا کہ مرد دوسری شادی کرے یا افیئر چلائے تو کس کے ساتھ چلاتا ہے؟ مرد سے خوف دوسری عورت کا ہے تو دوسری عورت بھی تو عوت ہی ہے نا؟ خود باز نہ آئیں اور شورمچائیں، اس فلاسفی کو سمجھنا چاہیئے۔ مرد کے پاس انکار کی قابلیت نہیں ہوتی لیکن اچھی عورت کے پاس انکار کی قابلیت ہوتی ہے۔

واضح رہے کہ ڈرامہ ’’میرے پاس تم ہو‘‘ روایتی ڈرامے کے تصورسے خاصا ہٹ کر ہے جس میں مصنف نے ایک مرد کو وفا کی انتہا پردکھایا ہے۔ اس کے مرکزی کرداروں میں ہمایوں سعید (دانش) ، عائزہ خان (مہوش) اور عدنان صدیقی (شہوار) شامل ہیں ۔

دیکھنے والوں میں بیحد مقبولیت حاصل کرنے والے اس ڈرامے کولکھنے والے خلیل الرحمان کو خاتون کا ایسا کردار دکھانے پر تنقید کا سامنا بھی کرنا پڑ رہا ہے۔

متوسط طبقے سے تعلق رکھنے والے کالج کے دوست دانش سے لومیرج کرنے والی مہوش ملازمت کرتی ہے اور امیر ہونے کے لالچ میں اس کے اپنے باس شہوار سے تعلقات استوار ہوجاتے ہیں۔

ڈرامہ فی الحال جاری ہے اور ہرقسط میں کئی چونکا دینے والے پہلو سامنے آرہے ہیں۔ مہوش کا دانش سے طلاق کا مطالبہ اور شوہر کا ردعمل سوشل میڈیا پر بھی خاصا زیر بحث رہا۔

ڈرامہ ’’میرے پاس تم ہو‘‘ کی کہانی سال 2002 میں نشر ہونے والے خلیل الرحمان قمر ہی کے لکھے گئے طویل دورانیے کے کھیل ’’بیوپار‘‘ سے لی گئی ہے۔

ڈرامے کے پروڈیوسر ہمایوں سعید ہیں جبکہ ڈائریکشن معروف فلمسٹار ندیم بیگ کی ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube