ہوم   > اینٹرٹینمنٹ

فلم ’’لال کبوتر‘‘ پھرسے بڑی اسکرین پر

1 week ago

اگر آپ نے ابھی تک کراچی کی سڑکوں پر ہونے والے جرائم سے متعلق سنسنی خیز پاکستانی فلم ’’لال کبوتر ‘‘ نہیں دیکھی تو اسے بڑی اسکرین پر دیکھنے کا موقع آچکا ہے۔

مختلف اعزازحاصل کرنے والی اس فلم کو ناقدین نے بھی بے حد سراہا۔ فلم میں مرکزی کردار ادا کرنے والی اداکارہ منشاء پاشا نےاعلان کیا ہے کہ شائقین کے بے حد اصرار پر اسے دوبار ریلیز کیا جا رہا ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر منشاءپاشا نے لکھا ’’ بڑا اعلان، بےحد اصرار پر فلم لال کبوتر 11 اکتوبر سے پھر سے سینما گھروں میں ریلیز کی جا رہی ہے‘‘۔

 

اداکارہ نے پیغام دیا کہ وہ سب لوگ جو اس حوالے سے پیغام بھیجتے رہے ہیں، جائیں اور فلم دیکھیں۔

 

یاد رہے کہ مارچ میں ریلیز ہونے والی فلم لال کبوتر کو شائقین کی جانب سے بےحد پزیرائی حاصل ہوئی تھی، اس کی پسندیدگی کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ شائقین فلم کے نیٹ فلیکس پر دستیاب نہ ہونے پر مایوس تھے۔

 

 

فلم کو پاکستان کی جانب سے آسکرایوارڈ کیلئے بھی بھیجا جائے گا۔ سماء ڈیجیٹل سے گفتگو میں فلم کے پروڈیوسر کامل چیمہ نے بتایا کہ کا کہنا تھا کہ پہلی فلم آسکر ایوارڈ کیلئے منتخب ہونے پر بہت پرجوش ہیں۔ یہ پوری ٹیم کے لئے بہت بڑا اعزاز ہے۔

فلم ’’لال کبوتر‘‘ نے ایک اور انٹرنیشنل ایوارڈ جیت لیا

 منشاءپاشا نے بھی اس فلم کواپنے  اب تک کے کیرئیر کا بیسٹ پراجیکٹ قراردیا ہے۔

فلم کراچی میں رہنے والوں کی زندگی، حالات اور مسائل پر مبنی ہے جو شہر کے دو مختلف طبقات کی نمائندگی کرتی ہے۔

منشاء پاشا اور احمد علی اکبر کا سماء ڈجیٹل سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ یہ حقیقت پر مبنی فلم ہے، جس میں کراچی میں مقیم ہر طرح لوگوں کو دکھانے کی کوشش کی گئی ہے، شہر میں ’’پُل کے اِس پار‘‘ کے لوگوں کا ’’پُل کے اُس پار‘‘ کے لوگوں کے ساتھ تعلق انتہائی دلچسپ اور منفرد انداز میں پیش کیا گیا ہے۔

فلم کو 92 ویں اکیڈمی ایوارڈ کے لیے ’انٹرنیشنل فیچر فلم ایوارڈ‘میں بھی پیش کیا جائے گاجس کا انعقاد 9 فروری 2020 کو لاس اینجلس میں ہوگا۔

فلم کی کاسٹ میں منشاء پاشا اوراحمد علی سمیت راشد فاروقی اورعلی کاظمی بھی شامل ہیں ۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں