کسی کو صحیح غلط سکھانا چاہتے ہیں تو پہلے اپنی جانب دیکھیں

April 29, 2019

سوشل میڈیا پر نئے کردار سے متعلق کیے جانے والے سوال کے غیر منطقی جواب پر تنقید کا سامنا کرنے والے یاسر حسین نے اپنے جواب کی وضاحت کی تو ساتھ ہی ان کی قریبی دوست اور ساتھی اداکارہ اقراء عزیز بھی میدان میں آگئیں اور یاسرپر تنقید کرنے والوں کو خوب سنا ڈالیں۔

یاسر حسین نے اپنی  آ نے والی ٹیلی فلم ’’ہیلپ می دردانہ ‘‘ میں خواجہ سرا کے کردار سے متعلق سوال پر ایسا جواب دیا تھا جس پر انہیں خوب تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔ ایک صارف نے انسٹا پر سوال کیا کہ یہی کردارکسی خواجہ سرا کو کیوں نہیں دیا گیا جس پر یاسر نے لکھا کہ ’’ مطلب آپ کو جاب چاہیئے‘‘۔

اس کے بعد یاسر پر تنقید کا سلسہ شروع ہوا تو اقراء عزیز نے تنقید کرنے والوں کو جواب دے ڈالا۔ اپنے کمنٹ میں انہوں نے لکھا کہ نفرت مبنی تبصرے مایوس کن ہیں، اپنے آپ کو انسان کہلانے والے اس دنیا کو بہتر بنانا چاہتے ہیں لیکن آپ ہی وہ لوگ ہوتے ہیں جوخواجہ سرا کو اپنا پڑوسی بھی نہ بنائیں۔

اقراء کے مطابق اگر آپ کسی کو صحیح اور غلط سکھانا چاہتے ہیں تو پہلے اپنی جانب دیکھیں کہ آپ نے کیا غلط کیا جو آج ہمیں خواجہ سراؤں کیلئے برابری کے حقوق کی مہم چلانی پڑ رہی ہے جو کہ پہلے سے ہی ان کا حق ہے ، جو ہم انہیں نہیں دیتے کیونکہ آپ میں سے کوئی نہ کوئی انہیں دل سے قبول نہیں کرتا۔

یاسر کی حمایت میں آواز اٹھاتے ہوئے اقراء نے مزید لکھا کہ ہمیں ہر ایک کی عزت کرنی چاہیئے اور اس سے مراد صرف خواجہ سرا نہیں بلکہ انسان اور جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے۔ میرا مقصد کسی کی توہین کرنا نہیں لیکن اچھائی کی شروعات خود سے کریں نہ کہ کسی پبلک فگر کے کسی جواب کو صحیح طور پر سمجھے بغیر آپ اپنے نمبر بڑھائیں۔

شدید تنقید کے بعد یاسر حسین نے وضاحت جاری کردی

اقراء کی رائے اپنی جگہ لیکن یاسر حسین نے متعلقہ جواب سمیت اس پوسٹ پر سے تمام تبصرے نہ صرف ڈیلیٹ کردیے بلکہ اس حوالے سے جاری کیے جانے والے وضاحتی بیان میں بھی کمنٹس کا آپشن کھلا نہیں رکھا۔ یعنی پڑھنے والے پڑھ لیں لیکن انہیں رائے کے اظہار کا حق نہیں دیا گیا۔