انشا جی کو دنیا سے کوچ کیے اکتالیس برس بیت گئے

January 11, 2019

معروف شاعر، مزاح نگار اور متعدد شعری و نثری کتابوں کے مصنف ابن انشاء کو مداحوں سے بچھڑے اکتالیس برس بیت چکے ہیں، تاہم ان کی تحریریں اور شاعری آج بھی لوگوں کے دلوں میں زندہ ہے۔

ابن انشاء اردو ادب کا عظیم نام ہے، شاعری ہو یا نثر،انشا جی کا کوئی ثانی نہیں۔ کل چودھویں کی رات تھی جیسی مشہور و معروف غزلوں کے شاعر کو شاعری کے ذریعے جذبات کے اظہار میں ملکہ حاصل تھی۔

 

ابن انشا اردو ادب میں سب سے منفرد رہے، شاعری کی تو دنیا بھر میں واہ واہ ہوئی، تحریریں درسی کتابوں کا حصہ بنیں۔ مزاح نگاری میں بھی انشا جی کا کوئی ثانی نہیں۔

 

ابن انشا انیس سو ستائیس کو بھارتی شہر جالندھر میں پیدا ہوئے۔ ان کا اصل نام شیر علی تھا، جو بعد ازاں ہجرت کے بعد پاکستان آئے اور ادب میں ابن انشا کے نام سے خوب نام کمایا۔

 

اردو ادب کو جلا بخشنے والے یہ عظیم شاعر، مصنف اور کالم نگار صرف اکیاون برس ہی جی پایا۔ گیارہ جنوری انیس سو اٹھہتر کو ابن انشا دنیا سے کوچ کرگئے۔