Thursday, January 28, 2021  | 13 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > اینٹرٹینمنٹ

سانگھڑ کے دلیپ کمار کا بدلہ

SAMAA | - Posted: Dec 21, 2018 | Last Updated: 2 years ago
Posted: Dec 21, 2018 | Last Updated: 2 years ago

مانگی لال سوچی پیشے کے اعتبار سے موچی  ہے لیکن بالی ووڈ اداکار دلیپ کمار کا بہت بڑا مداح ہے۔ مانگی لال کا کہنا تھا کہ فلم آن میں پریم ناتھ اور دلیپ کمار کے درمیان تلوار بازی دیکھی اور وہ تصویر میرے دماغ میں اٹک سی گئی،اس کے بعد دلیپ کمار بننے کی ٹھان...

مانگی لال سوچی پیشے کے اعتبار سے موچی  ہے لیکن بالی ووڈ اداکار دلیپ کمار کا بہت بڑا مداح ہے۔


مانگی لال کا کہنا تھا کہ فلم آن میں پریم ناتھ اور دلیپ کمار کے درمیان تلوار بازی دیکھی اور وہ تصویر میرے دماغ میں اٹک سی گئی،اس کے بعد دلیپ کمار بننے کی ٹھان لی۔

اس محبت کا معاملہ 58 سال پہلے شروع ہوا، مانگی لال سوچی  70 کی دہائی سے سندھ کے سانگھڑ ضلع میں ہے، لیکن دلیپ کمار بننے کی خواہش وقت کے ساتھ ساتھ مزید پختہ ہوگئی۔

مانگی کا کہنا ہے کہ دلیپ کمار کا ہیر اسٹائل بناتا تھا تاکہ لوگ مجھے بھی ایک ہیرو کے طور پر پہچانیں لیکن میری خواہش پوری نہ ہوسکی۔

ان کا کہنا تھا کہ سینما ہال میں بھارتی فلمیں چلتی تھیں جنھیں دیکھ کر ہم چاہتے تھے کہ کاش ہم یہ اداکار ہوتے لیکن شوق پورا نہیں ہوا، نواب شاہ گیا تو وہاں دلیپ کمار کی فلم آن لگی ہوئی تھی جس کا ٹکٹ 6 آنے (یعنی 30 پیسہ) تھا۔

مانگی کا کہنا تھا کہ میں نے دلیپ کمار کی بہت فلمیں دیکھیں، جب بھی ان کی کوئی فلم لگتی تھی تو میں ان کی اداکاری دیکھتا تھا کہ وہ کیسے اداکاری کرتے ہیں تاکہ میں بھی کسی ڈرامے میں حصہ لے سکوں۔

انہوں نے بتایا کہ 60 کی دہائی میں نے سانگھڑ سے ہزار کلومیٹر دور لاہور کے چار پانچ دورے کئے، جب بھی لاہور گیا فلم اسٹوڈیو میں اپنی قسمت آزمانے کیلئے ضرور جاتا رہا۔ یہ وہ زمانہ تھا جب پاکستانی سینما کاعروج تھا اور لاہور اس کا دل تصور کیا جاتا تھا۔

انھوں نے انکشاف کیا کہ پاکستان فلم انڈسٹری کے عظیم ستاروں سلطان راہی، مصطفی قریشی، ادیب سمیت کئی اداکاروں سے ملاقاتیں کیں اور ان سے اداکاری کی فرمائش بھی کی۔

مانگی نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ایک خواہش تھی کہ کسی بھی طرح اداکاری کرنی ہے، جب ڈائریکٹروں نے رد کیا تو میرے گھر والوں نے بھی میرا مذاق بنایا لیکن ہمت نہیں ہاری اور تھیٹر ڈراموں میں کام کرنا شروع کیا اور پہلا ڈرامہ فتح کے نام سے کیا۔

مانگی نے بتایا کہ پہلا گانا (یہ زندگی کے میلے دنیا میں کم نہ ہونگے، افسوس مگر ہم نہ ہونگے) موبائل پر بنایا اور اس کو بہت پزیرائی ملی جس کے بعد حوصلہ بڑھ گیا کہ مزید گانے بنائے جائیں اور پھر لیلا مجنوں کا کردار بھی نبھایا جس کیلئے تھرگئے۔

مانگی کا کہنا تھا کہ میں اتنا بڑا اداکار تو نہیں بنا لیکن چھوٹا اداکار ضرور بن گیا اور فلمی دنیا میں رد کرنے والوں سے بدلہ لے لیا۔

مانگی چاہتا ہے کہ لوگ اس کی اداکاری دیکھیں، اس کیلئے انہوں نے موبائل ویڈیوز بنانا شروع کر دیں۔

 
WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube