Friday, October 30, 2020  | 12 Rabiulawal, 1442
ہوم   > اینٹرٹینمنٹ

بھارتی وزیردفاع ،عامرخان کو سبق سکھانا چاہتے ہیں

SAMAA | - Posted: Aug 1, 2016 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Aug 1, 2016 | Last Updated: 4 years ago

ممبئی: بھارت کی انتہا پسند حکمراں  بھارتیہ جنتا پارٹی کی مسلمان دشمنی ڈھکی چھپی بات نہیں۔ بالی ووڈ کے سپراسٹارعامر خان بھی اپنے بیان پر معافی مانگنے کے باوجود پھر سے حکومتی عتاب کا نشانہ بنائے جا رہے ہیں۔ بھارتی وزیردفاع منوہر پاریکر نے حالیہ بیان میں عامرخان کو پھر سے تنقید کا نشانہ بنا...

ممبئی: بھارت کی انتہا پسند حکمراں  بھارتیہ جنتا پارٹی کی مسلمان دشمنی ڈھکی چھپی بات نہیں۔ بالی ووڈ کے سپراسٹارعامر خان بھی اپنے بیان پر معافی مانگنے کے باوجود پھر سے حکومتی عتاب کا نشانہ بنائے جا رہے ہیں۔

بھارتی وزیردفاع منوہر پاریکر نے حالیہ بیان میں عامرخان کو پھر سے تنقید کا نشانہ بنا کر نئی بحث چھیڑ دی ہے۔ منوہر پارکر نے عامر خان کا نام لیے بغیر انہیں سبق سکھانے کی دھمکی دے ڈالی۔

بھارتی وزیر دفاع نے ممبئی میں منعقدہ ایک تقریب  سے خطاب کے دوران شعلہ بیانی کرتے ہوئے کہا کہ’’ کچھ عرصہ قبل ایک اداکار نے اپنے بیان میں کہا تھاکہ  بھارت میں عدم برداشت کے باعث اس کی بیوی ملک چھوڑ کر جانا چاہتی ہے کیونکہ اسے یہاں ڈر لگتا ہے‘‘۔ بھارتی وزیردفاع کا کہنا تھا کہ بھارت کے خلاف ایسا افسوسناک بیان کسی صورت برداشت نہیں کیا جاسکتا ، اس لیے ملک کے خلاف بولنے والوں کو سبق سکھانا ضروری ہے جیسا کہ ایک اداکاراورآن لائن ٹریڈنگ کمپنی کو سکھایا گیا تھا۔

واضح رہے کہ عامر خان نے دسمبر 2015 میں ایک ایوارڈ تقریب کے دوران  بھارت میں بڑھتی انتہاپسندی اورعدم برداشت  پرفکرمندی کا اظہارکرتے ہوئے کہا تھا کہ اس لیے ان کی اہلیہ بھی بھارت میں بچوں کی پرورش کرنے پرخدشات کا شکارہیں۔

عامر خان کے اس بیان کے بعد ان کی مخالفت کا ایک طوفان کھڑا ہو گیا تھا۔ ہندوانتہا پسندوں جماعتوں بی جے پی اور شیوسینا نے تو انہیں پاکستانی ایجنٹ قرار دیتے ہوئے قتل تک کرنے کی دھمکیاں دیں۔ سنیپ ڈیل نامی آن لائن ٹریڈنگ کمپنی جس کے وہ برانڈ ایمبیسڈرتھے، کو بھی شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا اور اس کے صارفین کی تعداد میں بھی خاطر خواہ کمی ہوئی تھی۔ کمپنی نے چند ماہ بعد عامر خان سے سے اپنے معاہدے کی تجدید نہیں کی تھی۔

بعد میں اپنے بیان پرمعافی مانگنے کے باوجود اس کے باوجود عامرخان کو انتہا پسندوں کی جانب سے شدید مخالفت کے باعث  عارضی طور پربھارت بھی چھوڑنا پڑاتھا۔ مگرحکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی معافی مانگنے کے باوجود عامرخان معاف کرنے پر تیار نظر نہیں آتی۔

بھارتی وزیر دفاع کے متعصبانہ بیان کے بعد مخالف جماعت کانگریس اور دیگرحلقوں کی جانب سے انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنا یا جارہا ہے۔

واضح رہے کہ بھارت میں عدم برداشت سے متعلق عامر خان کے بیان کے بعد انہیں سیاحت کے سفیر کے عہدے سے بھی ہٹا دیا گیاتھا۔ سماء

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube