ویڈیو


ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کرنے سے منع کرنے  پر کالج کے لیکچرار نے بزرگ ٹریفک اہلکار کو تشدد کا نشانہ بناڈالا۔ ویڈیوسوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کرلیا ہے۔

گزشتہ روز شیر شاہ سوری روڈ پر پشاور پریس کلب کے سامنے ریاض علی نامی شخص نے ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کی، جس پر بزر گ سب انسپکٹر ٹریفک غفور خان نے انہیں روک لیا اور چالان دے رہا تھا کہ اس دوران ریاض علی نے بزرگ ٹریفک کو تشدد کا نشانہ بنانا شروع کیا۔

اس دوران قریب کھڑے ایک شہری نے اس سارے منظر کو موبائل میں ریکارڈ کیا اور سوشل میڈیا پر ڈال دیا۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ملزم نے ٹریفک وارڈن کو لات ماری جس سے وہ دور جاکر گرے۔ انٹرنیٹ پر اپلوڈ ہوتے ہی ویڈیو وائرل ہوگئی اور سوشل میڈیا صارفین نے اس پر غم و غصے کا اظہار کیا۔

انٹرنیٹ صارفین کے شدید ردعمل کے بعد آئی جی خیبر پختونخوا پولیس صلاح الدین محسود نے نوٹس لیتے ہوئے پشاور پولیس چیف کو تحقیقات کرنے کے احکامات جاری کر دیئے۔

پولیس حرکت میں آئی اور ملزم کو گرفتار کرکے پشاور کینٹ تھانہ شرقی کے حوالات میں بند کردیا اور ملزم کے خلاف سرکار کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا ہے جس میں پاکستان پینل کوڈ کی دفعات 420، 186، 353 اور 506 شامل کی گئی ہیں۔

دفعہ 420 دھوکا دہی اور فراڈ، دفعہ 186 کارسرکار میں مداخلت یا رکاوٹ، دفعہ 353 سرکاری ملازم پر حملہ اور دفعہ 506 سنگین نتائج کی دھمکیوں کے باعث شامل کی گئی۔

ٹریفک وارڈن پر تشدد کے دوران ملزم نے کہا تھا کہ وہ وکیل ہے جبکہ تھانے میں دوران تفتیش اس نے بتایا کہ وہ وکیل نہیں بلکہ گورنمنٹ ڈگری کالج اکبرپورہ میں اسٹنٹ پروفیسر ہے۔

کینٹ شرقی تھانے کے نائب محرر ارشد نے سماء ڈیجیٹل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پولیس نے ملزم کو ہفتے کی صبح عدالت میں پیش کردیا ہے۔

 

مزید دیکھیے


 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

پروگرامز

 

مزید پروگرامز

 

ثقافت

 
 

کھیل